سوچی اجلاس کے موقع پر ایرانی نمائندے کی اہم ملاقاتیں

سوچی، 31 جنوری، ارنا - روسی شہر سوچی میں معنقدہ شام کی قومی مذاکراتی کانفریس کے موقع پر اعلی ایرانی نمائندہ 'حسین جابری انصاری' نے اس کانفرنس میں شریک مختلف ممالک کے اعلی حکام کے ساتھ اہم ملاقاتیں کیں.

تفصیلات کے مطابق، حسین جابری انصاری جو ایرانی وزیر خارجہ کے سنیئر مشیر برائے امور سیاسی ہیں، گزشتہ دنوں شام کا دورہ کیا جس کے بعد وہ سوچی پہنچ گئے.

سوچی اجلاس سے پہلے جابری انصاری نے روسی صدر کے خصوصی نمائندہ برائے امور شام الیگزینڈر لاورینتی اوف کے ساتھ ملاقات کی جس میں فریقین نے شام کی تازہ ترین صورتحال بالخصوص شام کی قومی مذاکرات کانفرنس کے انعقاد پر گفتگو کی.

انہوں نے آستانہ میں شام امن عمل کے حالیہ اجلاس میں شرکت کے علاوہ ماسکو میں روسی وزیر خارجہ، ایلچی اقوام متحدہ، اور روسی اور ترک نمائندوں کے ساتھ بھی الگ الگ ملاقاتیں کیں.

ان ملاقاتوں کے بعد، ایرانی وزیر خارجہ کے سنیئر مشیر نے سوچی اجلاس کی افتتاحی نشست میں شریک ہوئے جس کے بعد شامی فریقین کے درمیان بات چیت کا باقاعدہ آغاز کیا گیا.

سوچی کانفرنس کے موقع پر حسین جابری انصاری نے چین کے خصوصی نمائندہ برائے امور شام کے ساتھ بھی ملاقات کی. فریقین نے شام کے بحران کے حل کے لئے ایران اور چین کے مشترکہ تعاون کے فروغ پر زور دیا.

اس ملاقات کے فورا بعد جابری انصاری اور اقوام متحدہ کے ایلچی برائے امور شام سٹیفن دی مستورا کے درمیان ملاقات ہوئی. فریقین نے شام کی قومی مذاکرات کانفریس کی پیشرفت اور مشاورت کا سلسلہ جاری رکھنے پر تبادلہ خیال کیا.

اس ملاقات کے بعد اعلی ایرانی سفارتکار نے سوچی شہر میں آئے ہوئے ایرانی صحافیوں اور غیرملکی میڈیا کے ساتھ گفتگو کی.

اس کے علاوہ حسین جابری انصاری روسی وزیر خارجہ، نمائندہ اقوام متحدہ، روسی صدر کے نمائندہ اور ترک نمائندے کی مشترکہ نشست میں بھی شرکت کی.

اعلی ایرانی سفارتکار نے سوچی کانفرنس کے موقع پر مختلف شامی مخالف گروہوں کے سربراہ اور وفد کے اراکین کے ساتھ بھی ملاقاتیں کیں.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@