میانمار قرارداد کے حق میں ایران کا ووٹ اقوام متحدہ کے سیکریٹریٹ میں جمع ہوگیا: قاسمی

تہران، 27 دسمبر، ارنا - ترجمان ایرانی دفترخارجہ نے کہا ہے کہ میانمار میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے حوالے سے قرارداد کی اسلامی جمہوریہ ایران نے حمایت کی ہے اور اس کے حق میں اپنا مثبت ووٹ ایک مراسلے کے ذریعے اقوام متحدہ کے سیکریٹریٹ میں جمع کرادیا ہے.

یہ بات' بہرام قاسمی' نے گزشتہ روز میانمار قرارداد کی ووٹنگ کی نشست میں ایران کی عدم موجودگی پر وضاحتی بیان میں کہی.

انہوں نے روہنگیا کے نہتے مسلمانوں کی حمایت میں ایران کے مستحکم موقف کو دہراتے ہوئے کہا کہ میانمار قرارداد کی ووٹنگ کی نشست میں ایران کی عدم موجودگی، پیشہ ورانہ اور تکنیکی وجوہات کی وجہ سے تھی لیکن ایران کی خارجہ پالیسی کے بنیادی اصولوں کی اہمیت کی بنا پر گزشتہ روز اقوام متحدہ کے سیکریٹریٹ میں ایک مراسلے کے ذریعے میانمار مسلمانوں کی حمایت کے لیے ایران کے مثبت ووٹ جمع کردیا گیا.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے گزشتہ تین دہائیوں کے دوران اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے غیر متوازن اور تبعیض آمیز رویے پر احتجاج کیا ہے.

قاسمی نے مزید بتایا کہ جنرل اسمبلی کی تیسری کمیٹی میں ممالک کے حالات کا مقابلہ کرنا اسلامی جمہوریہ ایران کی اصولی پالیسی ہے لہذا ایران نے فلسطین کے مسئلے سے متعلق قراردادوں کے بغیر دوسرے ممالک میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے حوالے سے قرارداد کے حق میں منفی ووٹ دیا ہے.

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ ہرچند ایران نے میانمار قرارداد کی ووٹنگ کی نشست میں شرکت نہیں کی لیکن ایران نے ایک ہی وقت میں اقوام متحدہ کے سیکریٹریٹ میں ایک مراسلے کے ذریعے روہنگیا مسلمانوں کے خلاف میانمار کی حکومت کی جارحیت کی مذمت کرنے کے علاوہ اس مظلوم قوم سے اپنی مضبوط حمایت کا اعلان کر دیا.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ میانمار قرارداد کی ووٹنگ کی نشست میں ایران کی عدم موجودگی کی اہم وجہ صرف انسانی حقوق کے حوالے سے سیاسی تنازعات کی غلط پالیسی پر ایران کے موقف کی عکاسی کرنا ہے اور اس قرارداد کی روح سے کوئی تعلق نہیں ہے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@