ایران میں تمام مذاہب کو قانون کے تحت آزادی میسر ہے: ایرانی آرچ بشپ

تہران، 26 دسمبر، ارنا - ایرانی دارالحکومت کی مسیحی برادری کے سنیئر آرچ بشپ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوری نظام کی بدولت وطن عزیز ایران میں تمام مذاہب کو قانون کے تحت برابر کے حقوق اور آزادی میسر ہے.

یہ بات تہران کے آرچ بشپ 'سبوہ سارکیسیان' نے حضرت عیسی علیہ السلام کے یوم ولادت کے موقع پر تہران کی اسلامی کونسل کے 33ویں اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ اس مبارک ایام میں دنیا کو امن، آرام اور دوستی کی مزید ضرورت ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ صورتحال میں جنگوں کے خاتمے اور امن اور استحکام کے قیام کے لیے دنیا کو اللہ کی مدد اور مداخلت کی ہمیشہ سے زیادہ اب ضرورت ہے.

سارکیسیان نے کہا کہ دنیا میں امن کا قیام، صرف انصاف اور مظلوم اقوام کے حقوق کے تحقق کے ذریعے حاصل ہوجائے گا.

عیسائی رہنما نے کہا کہ اقوام اور الہامی ادیان کے پیروکاروں کے درمیان باہمی مذاکرات، بھائی چارے اور احترام اور دوستی کے ذریعہ دنیا میں امن اور انصاف برقرار ہوجائے گا.

انہوں نے بتایا کہ ایران، باہمی مذاکرات کا گاہوارہ، پر امن بقائے باہمی اور مختلف مذہبی فرقوں کی سرزمین ہے اور ہوگا ہرچند بعض ممالک اس واضح حقیقت کو انکار کر رہے ہیں.

انہوں نے کہا کہ امریکی صدر 'ٹرمپ' کی جانب سے تل ابیب سے القدس شریف میں امریکی سفارتخانے کی منتقلی کے غیر منصفانہ فیصلے کو بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کے فیصلہ نے دنیا سمیت امن اور انصاف پسند ممالک کو نئے چیلنج کا سامنا کیا ہے.

انہوں نے کہا کہ ہم اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ فلسطینی شہری اپنے حقوق کی حصولی میں کامیاب ہوں گے.

انہوں نے مزید بتایا کہ فلسطین ہمیشہ فلسطینی قوم کا ملک اور بیت المقدس، ان کا دارالحکومت ہوگا.

انہوں نے ایک سعودی حکام کی جانب سے بیت المقدس کو گزشتہ ادوار میں سے اسرائیل کے دارالحکومت قراردینے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک کھلی جھوٹ ہے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@