عالمی ایٹمی ایجنسی ہی ایران جوہری معاہدے پر رائے دینے کی اہل ہے: ایران

تہران، 25 دسمبر، ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے جوہری معاہدے اور ایرانی کردار کے خلاف امریکی سینیٹ کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی ہی ایران جوہری معاہدے پر رائے دینے کی اہلیت رکھتی ہے.

یہ بات 'بہرام قاسمی' نے سوموار کے دن تہران میں اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ میں ملکی اور غیرملکی صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ امریکی سینیٹ کے 24 اراکین کے ایران مخالف کے الزمات کی کوئی حیثیت نہیں کیونکہ جوہری معاہدے کے حوالے سے صرف عالمی جوہری اداری ہی جانج پڑتا کرنا کا حق رکھتا ہے.

بہرام قاسمی نے ایران مخالف سعودی وزیر خارجہ کے حالیہ بیانات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران پر من گھڑت الزامات عائد کرنا عادل الجبیر کا وطیرہ بن چکا ہے ہے مگر وہ جان لیں کہ ایسے جھوٹے دعووں کا دور ختم ہوچکا ہے.

انہوں نے کہا کہ انسداد دہشتگردی پر اسلامی جمہوریہ ایران کے موقف سب کے لئے واضح ہے جس کے خلاف سعودی عرب کی سازشوں اور منصوبہ بندی ناکام ہوں گی.

انہوں نے ایران کے حوالے سے امریکی صدر کی غلطی پالیسی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں دہشتگردوں کی مسلسل شکست کے بعد ٹرمپ ایران کے خلاف جاہلانہ پالیسی پر عمل پیرا ہے مگر ان تمام صورتحال کے باوجود ان کے دعوے بے بنیاد ہیں.

ایرانی ترجمان نے کہا کہ مسئلہ فلسطین ہمارے لئے انتیائی اہمیت کا حامل ہے اور ہم سمجھتے ہیں دنیا میں القدس پر اتفاق رائے پایا جاتا ہے دوسری جانب ناجائز صہیونی ریاست خطے کے تمام مسائل اور تنازعات کی جڑ ہے.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@