حالیہ تبدلیوں سے پاک ایران تعاون کی مزید توسیع کیلئے فضا فراہم ہوگئی: پاکستانی چیئرمین سینیٹ

اسلام آباد، 24 دسمبر، ارنا - پاکستان کے ایوان بالا (سینیٹ) کے چیئرمین نے کہا ہے کہ حالیہ تبدیلیوں بالخصوص القدس پر ڈونلڈ ٹرمپ کے مؤقف کے بعد اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان تعاون کو مزید بڑھانے کے لئے فضا فراہم ہوگئی ہے.

یہ بات 'میاں رضا ربانی' نے اتوار کے روز پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے ایران کی اسلامی مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) کے اسپیکر علی لاریجانی کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے مشترکہ مقاصد کے حصول کیلئے علاقائی ممالک کے درمیان تعاون بڑھانے پر زور دیا.

انہوں نے اپنے حالیہ دورہ ایران میں ایران کی میہمان نوازی پر شکریہ ادا کرتے خطے کی موجودہ صورتحال اور حالیہ تبدیلیوں کو ایران اور پاکستان کے درمیان دوطرفہ تعلقات بڑھانے میں سب سے اہم اور موثر عنصر قرار دیا.

ربانی نے کہا کہ جبکہ موجودہ صورتحال میں دہشتگردی کا اصل محور، واشنگٹن، تل ابیب اور کچھ دوسرے ممالک کے درمیان باہمی تعاون ہے امریکہ نے اپنی خارجہ پالیسی کے پہلے بیان میں ایران اور کئی دوسرے ممالک کو عالمی برادری کے لیے خطرہ قرار دے دیا ہے.

رضا ربانی نے علاقائی چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے علاقائی ممالک سمیت مسلمانوں کے درمیان باہمی تعاون کے فروغ دینے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہم اس بات پر یقین ہیں کہ اسلامی تعاون تنظیم نے اس حوالے سے اپنے فرائض پر عمل درآمد نہیں کیا ہے.

پاکستانی سینیٹ کے اسپیکر نے مزید کہا کہ امید ہے کہ ماسکو کے اجلاس سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں بہتری آئے گی.

اس موقع نے ایرانی اسپیکر نے کہا کہ ہمیں بین الاقوامی پالیسی کو پہلے سے زیادہ شفاف بنانے کے لیے ٹرمپ کی تعریف کرنی چاہیے.

انہوں نے کہا کہ امریکہ ہمیشہ دوسرے ممالک سمیت اسلامی ممالک پر قابوپانا اور تفرفہ ڈالنا چاہتا ہے اور امریکی صدر کے حالیہ فیصلہ نے صرف امریکی موقف کو پہلے سے زیادہ شفاف بنا دیا ہے.

انہوں نے ایران اور پاکستان کے درمیان بڑھتی ہوئے تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے پاک، ایران امن گیس پائپ لائن کے نفاذ کو باہمی اقتصادی تعلقات کی توسیع کے لیے اہم موقع قرار دیا.

انہوں نے کہا کہ ایران اس پائپ لائن کے حوالے سے اپنی ذمہ داریوں پر عمل کیا ہے اور اب پاکستان کی باری ہے.

انہوں نے ایران اور پاکستان کے بینکی نظام کے کچھ مسائل کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اب تک اس حوالے سے کوئی اقدام نہیں اٹھایا گیا ہے.

یاد رہے کہ ایرانی اسپیکر ایک اعلی سطحی پارلیمانی وفد کے ہمراہ انسداد دہشتگردی اور علاقائی تعاون کے حوالے سے 6 ملکی اسپیکرز کانفرنس میں شرکت کے لئے گزشتہ روز اسلام آباد پہنچ گئے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@