اقوام متحدہ میں آلودگی کا مقابلہ کرنے کی ایرانی قرارداد کی منظوری کے مثبت اثرات

نیو یارک، 24 دسمبر، ارنا – اقوام متحدہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے ماحولیاتی آلودگی کے حل کے لئے قومی، علاقائی اور عالمی تعاون کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اقوام متحدہ میں ایرانی قرارداد کی منظوری اس بات کا ثبوت ہے کہ آج ماحولیاتی آلودگی ایک عالمی مسئلہ بن چکا ہے.

یہ بات 'غلام علی خوشرو' نے اتوار کے روز ارنا کے نمائندے کے ساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے اقوام متحدہ میں منظور ہونے والی قرارداد کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلسل کوششوں کے ساتھ ماحولیاتی آلودگی اور دھول کا مسئلہ ایک عالمی مسئلے میں بن چکا ہے اور ایرانی قوم ایسے مسائل کا شکار ہیں اسی لئے اقوام متحدہ میں ان کا حل ہماری اہم ذمہ داری ہے.

خوشرو نے اس بات پر زور دیا کہ آلودگی اور دھول سے مقابلہ کرنے کا اہم حل قومی، علاقائی اور عالمی سطح پر بھرپور کوشش کرنا ہے.

انہوں نے کہا کہ ایرانی قرارداد کے حوالے سے گزشتہ دو ماہ سے زائد دیگر ممالک کے ساتھ اہم مشاورت کی گئی تھی جس میں عوامی صحت کے لئے دھول اور آلودگی کو بڑا خطرہ قرار دیا گیا تھا.

انہوں نے بتایا کہ اس قرارداد نے اس بات پر زور دیا کہ دھول اور ماحولیاتی آلودگی پوری دنیا کو اقتصادی، سماجی، انسانی اور ماحولیاتی نقصانات پہنچ ہو رہا ہے.

انہوں نے کہا کہ یہ قرارداد قوم کی صحت پر دھول کے منفی اثرات کی نشاندہی کرتی ہے اور پائیدار ترقی کے لئے ان کو ایک بڑی رکاوٹ قرار دے کر اس سے مقابلہ کرنے کے لئے عالمی اقدامات کا مطالبہ کر رہی ہے.

ایرانی مندوب نے کہا کہ ایرانی حکومت کی درخواست کی بنا پر گزشتہ مہینوں میں ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنے کے حوالے سے تہران میں عالمی کانفرنس کا انعقاد بھی کیا گیا اور یہ کانفرنس دنیا میں آلودگی کے خاتمے کے لئے ایک اہم قدم تھا.

انہوں نے بتایا کہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اس حوالے سے اہم کردار ادا کرسکتی ہے اور ان کی شراکت داری نہایت اہم ہے اور ہم ان سے تکنیکی امدادوں کی فراہمی، اقوام کی صحت پر دھول کے مسائل کے اثرات کا خاتمہ اور متاثرہ ممالک کی حمایت کا مطالبہ کرتے ہیں.

خوشرو نے کہا کہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اور اقوام متحدہ کی تمام عالمی تنظیموں کو باہمی تعاون کے ساتھ ماحولیاتی آلودگی سے متاثرہ ممالک کی حمایت اور اس کے برے اثرات کے خاتمے کرنے کے لئے موثر کردار ادا کرنا چاہیئے.

انہوں نے کہا کہ ماحولیاتی آلودگی کا مقابلہ کرنا اسلامی جمہوریہ ایران کی پہلی ترجیح ہے اور اس حوالے سے سنجیدہ اقدامات بالخصوص تہران میں اقوام متحدہ کے ساتھ باہمی تعاون کے ذریعہ عالمی کانفرنس کا انعقاد کرنا ان میں سے ایک ہے.

ایرانی سفیر نے کہا کہ اس قرارداد میں اقوام متحدہ بالخصوص عالمی ادارہ صحت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ ماحولیاتی آلودگی کے شکار ممالک کی مدد کی جائے تا کہ اس مسئلے کا خاتمہ کیا جاسکے اسی لئے ان کی جانب سے ایک عالمی حکمت عملی بنانا ضروری ہے.

ایرانی مستقل مندوب نے کہا کہ دھول اور ماحولیاتی آلودگی سے مقابلہ کرنا اقوام متحدہ کی تمام تنظیموں کی پہلی ترجیح ہونا چاہیئے اور ہمارے ملک کی تجویز کی مبنی پر 2018 کے جنوری کو اقوام متحدہ کے سربراہ کی قیادت میں تمام ممالک کے اعلی حکام، علاقائی کمیٹیاں، این جی او اور اقوام متحدہ کی تمام تنظیموں کے درمیان ایک سربراہی اجلاس کا انعقاد کیا جائے گا.

انہوں نے کہا کہ منعقد ہونے والے اجلاس کا مقصد دھول کے مسائل سے مقابلہ کرنے کی عالمی پالیسی پر تبادلہ خیال کرنا ہے اور اس کے نتائج کی رپورٹ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کی رپورٹ میں عکاسی کی جائے گی.

خوشرو نے کہا کہ قرارداد کے تحت ماحولیاتی آلودگی سے مقابلہ کرنے کے لئے ٹیکنالوجی، تکنیکی امداد، صلاحیتوں کو بڑھانے کے علاوہ عالمی موسمیاتی تنظیم، اقوام متحدہ کے ماحولیاتی پروگرام اور ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اہم کردار ادا کریں.

یاد رہے کہ حالیہ دنوں میں اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے ماحولیاتی آلودگی اور دھول کے مسئلے کا مقابلہ کرنے کے حوالے سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ایک قرارداد پیش کی گئی جس کو منظور کرلیا گیا ہے.

تفصیلات کے مطابق، 3 جولائی کو ایرانی دارالحکومت تہران میں ماحولیاتی آلودگی اور دھول سے نمٹنے کا عالمی کانفرنس منعقد کی گئی جس میں 43 ممالک کے اعلی حکام نے شرکت کی.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@