صہیونی قبضہ مشرق وسطی کے بحرانوں کا مرکز ہے: ایرانی سفیر

نیو یارک، 22 دسمبر، ارنا - اقوام متحدہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے کہا ہے کہ فلسطین پر صہیونیوں کا قبضہ مشرق وسطی کے تمام بحرانوں کا مرکز ہے اور یہ وہ حقیقت ہے جس کا اقوام متحدہ نے سالوں پہلے انکشاف کیا تھا.

ان خیالات کا اظہار 'غلام علی خوشرو' نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے غیرمعمولی اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کیا جس کا مقصد ٹرمپ کو القدس کے حوالے سے اپنے فیصلے کو واپس لینے پر زور دینا تھا.

اس موقع پر ایرانی سفیر نے کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست نے ظلم و بربریت کے ذریعے مظلوم فلسطینی عوام کو سالوں سے یرغمال بنا رکھا ہے اور ایسے مظالم کا ساتھ دینے میں امریکہ نے اسرائیل کو تنہا نہیں چھوڑا.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے ہمیشہ ویٹو سے غلط فائدہ اٹھایا جس کا مقصد صرف صہیونیوں کے مفادات کو تحفظ فراہم کرنا ہے.

غلام علی خوشرو نے کہا کہ بیت المقدس کو صہیونی دارالخلافہ تسلیم کرنے پر امریکہ نے ایک بار پھر ثابت کردیا کہ اسے صرف اسرائیل سے سروکار ہے اور اس کی نظر میں فلسطینی قوم کا کوئی احترام نہیں.

انہوں نے کہا کہ جنرل اسمبلی میں ممالک کی بھاری ووٹنگ سے یہ بات کھل کر سامنے آئی کہ امریکی عزائم ناکام رہ گئے اور فلسطین پر قبضہ اب بھی مشرق وسطی کے تمام بحرانوں کی اصل جڑ ہے.

ایران کے مستقل مندوب نے مزید کہا کہ فلسطین مسلمانوں اور تمام عالم اسلام کے دل و ذہن میں زندہ رہے گا اور اس حقیقت کو جھٹلانے کا مطلب قابض اور جابر صہیونیوں کا ساتھ دینے کا مطلب ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@