ایران کیساتھ مقامی کرنسی کے ذریعے تجارت کرنے کے خواہاں ہیں: آذری صدر

باکو، 21 دسمبر، ارنا - جمہوریہ آذربائیجان کے صدر مملکت نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تجارت کے فروغ کے لئے لوکل کرنسی کے استعمال پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ آذربائیجان میں اس مقصد کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے گئے ہیں.

یہ بات صدر 'الہام علیئف' نے باکو میں منعقد بین الاقوامی اسلامی یکجہتی کانفرنس کے موقع پر ایران کے صدارتی چیف آف سٹاف 'محمود واعظی' کے ساتھ ایک خصوصی ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ آذری حکومت ایران کے ساتھ تجارتی سرگرمیوں کے لئے مقامی کرنسی کا استفادہ کرنے پر کام کررہی ہے.

صدر علیئف نے مزید کہا کہ ان کا ملک اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ باہمی تعلقات کو فروغ دینے کا خواہاں ہے.

انہوں نے ایران اور آذربائیجان کے درمیان مشترکہ منصوبے بشمول ادویات اور آٹوموٹو کی مشترکہ فیکٹریوں، آستارا ریلوے اور شمال جنوب راہداری کے منصوبوں کی جلد تکمیل کی ضرورت پر زور دیا.

خطے میں انسداد دہشتگردی کے حوالے سے اسلامی جمہوریہ ایران کے اہم کردار کو سراہتے ہوئے انہوں نے تہران اور باکو کے درمیان سیکورٹی، دفاعی تعاون اور اینٹلی جینس شیرینگ کو بڑھانے کا مطالبہ کیا.

الہام علیئف نے بین الاقوامی اسلامی یکجہتی کانفرنس میں ایران کی شرکت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایران اور آذربائیجان مختلف خطی و عالمی مسائل کے حوالے سے یکساں مؤقف رکھتے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں ممالک امت اسلامی کی وحدت اور یکجہتی کے لئے پُرعزم ہیں.

خیال رہے کہ جمہوریہ آذربائیجان میں 2017 بین الاقوامی اسلامی یکجہتی کانفرنس کا انعقادکیا گیا جس میں آذری صدر اور ایران کے صدارتی چیف آف سٹاف محمود واعظی سمیت عالم اسلام کے اعلی حکام اور اہم شخصیات شریک تھے.

آذری دارالخلافہ باکو میں منعقدہ اس کانفرنس کا عنوان مذاہب اور ثقافت کے درمیان مکالمہ تھا.

اس کانفرنس میں 40 اسلامی ممالک سے اعلی حکام، مذہبی شخصیات، آٹھ بین الاقوامی اداروں کے عہدیدار اور بعض سربراہان مملک کے خصوصی نمائندوں نے شرکت کی.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@