مذاہب اور اقوام کیخلاف نفرت انگیز بیانات سے انتہاپسندی کو فروغ ملے گا: ایرانی سفیر

نیو یارک، 21 دسمبر، ارنا - اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل مندوب نے مذاہب اور ادیان کے خلاف نفرت انگیز رویے کو انتہاپسندی کے فروغ کے لئے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انتہاپسندی اور تشدد کی جڑوں کو ہرگز کسی مذہب یا قوم سے منسلک نہیں کرنا چاہئے.

ان خیالات کا اظہار 'غلام علی خوشرو' نے جنرل اسمبلی کی جانب سے ایران کی تشدد اور انتہاپسندی سے پاک دنیا کی قرارداد کو منظور کرنے کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اس قرار داد کا مسودہ ایرانی صدر حسن روحانی کی طرف سے اقوام متحدہ کے سیکورٹی جنرل کو پیش کیا گيا تھا اس کی منظوری کے بعد اب اقوام متحدہ کے سربراہ ہر دو سال بعد اس حوالے سے ہونے والے پیش رفت کے بارے میں اقوام متحدہ کے ممبران کی آگاہی کے لئے ایک جامع رپورٹ پیش کریں گے.

انہوں نے دنیا میں انتہاپسندی اور دہشت گردی سے مقابلے کی اہمیت بتاتے ہوئے کہا کہ یہ ایک خطرناک صورت حال ہے جس نے پوری دنیا کو لپیٹ میں لے لیا ہے ، عصر حاضر میں ہم انتہا پسندی کے حوالے سے پائے جانے والے رجحان کی کوئي بھی مذہب اور قوم کو ذمہ دار نہیں ٹھیرا سکتے کیوں کہ یہ ایک بین الاقوامی مسئلہ ہے.

انہوں نے امریکی صدر کے حالیہ بیانات جس میں انہوں نے اسلام کو نشانہ بنایا تھا اسے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے بیانات سے دنیا مزید غیر مستحکم اور ناامن ہوجائے گی.

1*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@