دشمن کا مقصد ہمیں کمزور اور خطے میں ہمارا اثرورسوخ کو محدود کرنا ہے: ایرانی وزیر دفاع

تہران، 20 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر دفاع اور لاجیسٹک نے کہا ہے کہ آج دشمن اس نتیجے پر پہنچ چکا ہے کہ ایران کو دھمکیوں سے نہیں ڈرایا جا سکتا بلکہ وہ ہماری دفاعی صلاحیت اور خطے میں اثر و رسوخ کو کم کرنے کی سازش کر رہا ہے.

یہ بات بریگیڈیئر جنرل 'امیر حاتمی' نے آج بروز بدھ مسلح افواج کے کماندڑوں کی موجودگی میں 'انقلابی فوج' کے عنوان سے منعقدہ کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ آج ایرانی فوج کی پوزیشن اعلی سطح پر ہے اور رہبر معظم، قوم اور حکومت اس کا احترام کرتے ہیں اور ایرانی فوج کے حوالے سے قائد اسلامی انقلاب کا بیانات ہماری افواج کی بہادری اور اقتدار کی علامت ہیں اور ہم ہمیشہ حزب اللہ کی فوج کے معیار کو قریب کرنے کی کوشش کر رہے ہیں.

بریگیڈیئر جنرل حاتمی نے ایرانی مسلح افواج کی دفاعی اور سیکورٹی پوزیشن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دشمن ہمارے ملک کے خلاف سازشیں کر رہا ہے مگر خود جانتا ہے کہ ان کی ایران مخالف دھمکیاں ہماری طاقت پر کوئی اثر نہیں ڈال سکتی ہیں اور ان کا مقصد ہمارے علاقائی اثرات اور دفاعی طاقت کو محدود کرنا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی فوج اسلامی انقلاب کی اعلی اقدار پر انحصار کے ساتھ خودمختار قوموں کے دلوں پر گہرے اثرات مرتب کر چکی ہے اور خطی ممالک جان لیں کہ ہمارا مقصد صرف سلامتی اور سیکورٹی کا قیام ہے مگر دشمن خطے میں بدامنی کو پھیلانے اور ہتھیاروں کی فروخت سے اپنی آمدنی میں اضافہ کرنا چاہتا ہے.

ایرانی وزير دفاع نے اقوام متحدہ میں تعینات خاتون امریکی مندوب 'نیکی ہیلی' کی جانب سے یمن سے سعودی عرب پر میزائل حملے میں اسلامی جمہوریہ ایران کو ملوث کرنے کے الزام کو اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایسے بے بنیاد دعوے دنیا اور خطے میں ان کی مضحکہ خیز پالیسیوں کی شکست کی علامت ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ آج ایرانی سپریم لیڈر کی ہوشیارانہ ہدایات کے ساتھ ایرانی فوج کی طاقت ملک کی قومی سلامتی کو فراہم کرکے اور ایرانی آرمی اس حوالے سے اہم کردار ادا کر رہی ہے.

تفصیلات کے مطابق، 'انقلابی فوج' کے عنوان سے ایرانی مسلح افواج کے کماندڑوں کے دو روزہ قومی اجلاس کا گزشتہ روز ایرانی دارالحکومت تہران میں آغاز ہو گیا ہے جس میں اعلی ایرانی کمانڈرز شریک ہیں.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@