ایران کا امریکی قومی سلامتی حکمت عملی پر شدید ردعمل، الزامات کی مذمت

تہران، 20 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے امریکی قومی سلامتی کی نئی حکمت عملی کی پر زور مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ اپنی نامعقول پالیسی سے دنیا کو مزید بدامنی کی طرف لے جارہا ہے.

یہ بات 'بہرام قاسمی' نے امریکی قومی سلامتی کی نئی پالیسی پر اپنے شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ یہ پالیسی امریکی اور ان کے اتحادی خطی ممالک کے بے بنیاد دعوے اور ایران مخالف الزامات کی نشاندہی کرتی ہے.

قاسمی نے کہا کہ امریکہ کی ایسی بیوقوفانہ حکمت عملی اس بات کا ثبوت ہے کہ ٹرمپ کا مقصد اندرونی اور بین الاقوامی چیلنجز، تنازعات اور بدامنی کا پھیلانا ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ کے مسائل اور اندرونی چیلنجوں کی اصلی وجہ دوسرے ممالک بالخصوص مغربی ایشیا اور خلیج فارس کے ممالک کے مقابلے میں اس ملک کے اعلی حکام کی مسلسل غلطی پالیسیاں ہے.

انہوں نے کہا کہ امریکی حکام اپنی ناکام پالیسی اور رویے کی از سر نو نگرانی نہیں چاہتے ہیں اسی لئے دیگر ممالک سمیت اسلامی جمہوریہ ایران کی طاقت کو اپنے مفاد اور قومی سلامتی کے لئے ایک خطرہ قرار دے رہے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ کے بیوقوفانہ رویے سے دنیا بھر میں بدامنی کی نئی لہر پیدا ہوگی.

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ عالمی برادری کی خاموشی کی وجہ سے ٹرمپ اپنے بیوقوفانہ اقدامات اور ایران مخالف شیطانی سازشوں کو جاری کر رہا ہے.

تفصیلات کے مطابق، وائٹ ہاؤس نے پیر کے روز امریکی قومی سلامتی کی نئی پالیسی کی نشر کی جس میں تین گروپ سمیت روس اور چین، اسلامی جمہوریہ ایران اور شمالی کوریا، دھمکی دینے والی تنظیمیں (فلسطینی قوم) امریکہ میں چیلنج پیدا کر رہے ہیں.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@