شہریوں کے حقوق کی پاسداری ایران کی سیکورٹی کی ضامن ہے: ظریف

باکو، 20 دسمبر، ارنا - ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ مذہبی، فرقے اور سیاسی مسائل سے بالاتر ہوکر شہریوں کے حقوق کی پاسداری بالخصوص ایرانیوں کا احترام نظام اور حکومت کا فرض ہے اور یہ سلسلہ ملکی سیکورٹی کے لئے نہایت اہمیت کا حامل ہے.

ان خیالات کا اظہار 'محمد جواد ظریف' نے جمہوریہ آذربائیجان کے دورے کے موقع پر 'باکو' میں بسنے والے ایرانی شہریوں کی موجودگی میں ایک خصوصی نشست میں خطاب کرتے ہوئے کیا.

انہوں نے کہا کہ ایرانی حکومت کی جانب سے شہری حقوق کے عنوان سے مرتب کئے جانے والے منشور کی آج پہلی سالگرہ ہے اور اس موقع پر مجھے خوشی ہے کہ دوست او برادر ملک آذربائیجان میں مقیم ایرانی شہریوں کے ساتھ ہوں.

ظریف نے کہا کہ ایرانی شہریوں کے احترام اور ان کے حقوق کی تعمیل ملک کے لئے اہمیت کی حامل ہے کیونکہ ہم سب وطن اور اپنی سیکورٹی کو عوام کے مرہون منت سمجھتے ہیں.

انہوں نے کہا کہ عوام کے حقوق کی بلاامتیاز پاسداری کرنے کا نعرہ کسی خاص مقصد یا مغربی طریقے پر عمل کرنا نہیں بلکہ وطن عزیز کی سیکورٹی کے لئے ضروری ہے.

ظریف نے کہا کہ مگر اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہمیں کسی مشکل یا کمی کا سامنا ہے بلکہ صدر مملکت بھی اس بات پر زور دیتے ہیں کہ ہمیں عوام کے حقوق کو ترجیح اور اہمیت دینی چاہئے کیونکہ ہمارے پاس سب کچھ ہیں تو وہ صرف عوام کی وجہ سے ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ آج اگر خطے میں ریاستوں کو دیکھا جائے تو اسلامی جمہوریہ ایران کے سوا ایسا کوئی ملک نہیں جہاں سیکورٹی کے لحاظ سے مضبوط ہو بیرونی دباؤ کے لحاظ سے بھی ایران اسی خطے کا واحد ملک ہے جس پر شدید بیرونی دباؤ ہے مگر وطن عزیز نے گزشتہ 38 سالوں سے اس دباؤ کے باوجود مختلف شعبہ ہائے زندگی میں ترقی حاصل کی اور ہمیں سائنس و ٹیکنالوجی کے شعبوں میں قابل قدر کامیابیاں ملیں.

ظریف نے جمہوریہ آذربائیجان کے دورے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران اور آذربائیجان کے درمیان تعمیری اور مثبت تعلقات قائم ہیں اور یہ مراسم ترقی اور مزید کامیابی کی سمت گامزن ہیں.

خیال رہے کہ ایران کے وزیر خارجہ ایران، ترکی اور آذربائیجان کی پانچویں سہ فریقی نشست میں شرکت کے لئے گزشتہ رات باکو کے دورے پر پہنچ گئے ہیں.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@