فلسطین کی مالی، سیاسی اور عسکری حمایت کرتے ہیں: ایرانی اسپیکر

تہران، 18 دسمبر، ارنا - ایران کے اسپیکر نے کہا ہے ہم اس بات کے انکشاف سے خوفزدہ نہیں ہیں کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے فلسطین کی مالی، سیاسی اور عسکری حمایت جاری ہے مگر ایران کی یمن کو عسکری امداد کا دعوی جھوٹا ہے.

ان خیالات کا اظہار اسلامی مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) کے اسپیکر 'علی لاریجانی' نے پیر کے روز تہران میں اسلامی تعاون تنظیم کے رکن ممالک کی پارلیمانی یونین (PUIC) کے غیرمعمولی اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کیا.

یہ اجلاس او آئی سی ممالک کی پارلیمانی یونین کی فلسطین کمیٹی سے متعلق ہے جس کا مقصد بیت المقدس کے خلاف ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ فیصلے کا جائزہ لینا ہے.

اس نشست میں مالی اور عراقی اسپیکر بھی شریک تھے جو اسلامی پارلیمانی یونین کے سابقہ اور موجودہ سربراہ ہیں.

اس موقع پر ایرانی اسپیکر نے کہا کہ ہماری جتنی طاقت اور فورس ہیں اسے فلسطین کے لئے استعمال کیا جائے گا کیونکہ یہی فلسطینیوں کی نجات کا راستہ ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں کوئی ڈر نہیں کہ یہ کہیں کہ ہم فلسطین کی مالی، سیاسی اور عسکری حمایت کرتے ہیں اور اس عمل کو ایک اصولی رویہ سمجھتے ہیں.

انہوں نے ایران کے خلاف یمن کو میزائل فراہم کرنے کے الزامات کے جواب میں کہا کہ ہم ایسا ملک نہیں کہ اگر کسی ملک کی عسکری مدد کررہے ہیں تو اسے پوشیدہ رکھیں، ہم فلسطین کی عسکری پشت پناہی کرتے ہیں مگر یمن کی ایسی مدد نہیں کی اور اس حوالے سے دعووں کو جھوٹ سمجھتے ہیں.

علی لاریجانی نے کہا کہ یمنیوں کے پاس موجود میزائل انھیں کا ہے اور بعض ممالک محض الزامات اور دعووں سے اس حقیقت کا انکار نہیں کرسکتے.

انہوں نے مزید کہا کہ اگر امریکہ خطے میں نیا مسئلہ پیدا کرنا چاہتا ہے تو کوئی اور طریقہ ڈھونڈے کیونکہ ایسے عزائم سے اسے فائدہ نہیں ملے گا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@