امریکہ کیخلاف مقدمہ جلد اقوام متحدہ میں دایر کیا جائے گا: ایرانی وزیر دفاع

تہران، 18 دسمبر، ارنا - ایران کے وزیر دفاع اور لاجسٹک نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران یمن کی انصاراللہ تنظیم کو ھتھیاروں کی فراہمی کے حوالے سے خاتون امریکی نمائندے کے حالیہ الزامات کے خلاف جلد اقوام متحدہ میں اپنے باضابطہ احتجاج ریکارڈ کرائے گا.

یہ بات بریگیڈیئر جنرل 'امیر حاتمی' نے آج بروز پیر اقوام متحدہ میں تعینات خاتون امریکی مندوب 'نیکی ہیلی' کے ایران مخالف بے بنیاد الزامات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ ہماری دفاعی فورسز کا تکنیکی شعبہ ایران کی جانب سے یمن کی انصاراللہ تنظیم کو ھتھیاروں کی فراہمی اور اقوام متحدہ کو اس میزائلوں کی تصاویر بھیجنے کے حوالے سے نیکی ہیلی کے دعوے کا جائزہ لے رہا ہے.

بریگیڈیئر جنرل حاتمی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی دفاعی فورسز کا تکنیکی شعبہ خاتون امریکی نمائندے کے حالیہ الزامات کے خلاف جلد اقوام متحدہ میں اپنے باضابطہ احتجاج ریکارڈ کرائے گا.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس مقدمے کے تحت ہمارے ملک کی درخواست کی بنا پر دشمن کو اپنے دعوے کے ثبوت کے لئے اس میزائلوں کے ایک ٹکڑے کو ایران کا حوالہ کرنا چاہیئے اور چیک کرنے کے بعد حتمی تبصرہ کا اعلان کر سکتے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ ہم چیک کرنے کے بغیر اس دعوے کا جواب نہیں دے سکتے ہیں اسی لئے جلد سے امریکہ کیخلاف مقدمہ اقوام متحدہ میں دایر کیا جائے گا.

یاد رہے کہ نیکی ہیلی نے جمعرات کے روز امریکی وزارت دفاع میں سعودی عرب کے میزائل حملے میں انصار اللہ کی تحریک کے ہتھیاروں کی فراہمی کے لئے اسلامی جمہوریہ ایران پر الزام لگایا.

ایرانی وزیر دفاع اور لاجسٹک نے ہفتہ کے روز روسی نیوز ایجنسی اسپوٹنک کے نام سے ایک ای میل کے پیغام میں کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران یمن کی انصاراللہ تنظیم کو ھتھیاروں کی فراہمی کے حوالے سے خاتون امریکی نمائندے کے حالیہ الزامات کے خلاف جلد اقوام متحدہ میں اپنے باضابطہ احتجاج ریکارڈ کرائے گا.

9393*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@