ایران اپنے مفادات کیلئے ایک طاقتور اور ترقی یافتہ خطے کے حصول میں کوشاں ہے: ظریف

تہران، 18 دسمبر، ارنا - ایران کے وزیر خارجہ نے علاقائی ممالک کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کے احترام پر زوردیتے ہوئے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنے مفادات کے لئے ایک طاقتور، ترقی یافتہ اور مستحکم خطے کے حصول کے لئے فعال کردار ادا کررہا ہے.

یہ بات' محمد جواد ظریف' نے پیر کے روز تہران میں ایرانی خارجہ تعلقات کی تاریخ کے عنوان سے منعقدہ کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے بتایا کہ خوف پھیلانے والی عالمی طاقتیں ایران کی تہذیب اور ہماری قوم کی مزاحمت پر مزید غور کرنا چاہیے.

انہوں نے مزید بتایا کہ مغربی میڈیا، ایران فوبیا کے پھیلاو کے مقصد سے ہمارے ملک پر پرانی سلطنت کی بحالی اور اپنے علاقائی دائرہ اختیار بڑہانے کے جھوٹ اور بے بنیاد الزامات لگا رہی ہیں.

انہوں نے بتایا کہ ایران کے خارجہ روابط کی تاریخ، بہت سی عبرتیں اور مشقوں سے مملو ہے جو موجودہ حساس صورتحال میں بین الاقوامی تبدیلیاں اور سائنسی انتظام اور خارجہ پالیسی کو بہتر سمجھنے کے لیے اس پر توجہ کرنا لازمی ہے.

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ہمیں خارجہ پالیسی کے میدان میں عالمی سامراج پر بھروسا نہ کرنا، پڑوسیوں کے ساتھ باہمی تعلقات بڑہانے کو مد نظر رکھنا چاہیے.

انہوں نے ایرانی عوام کے لیے ملک کی علاقائی سالمیت، خودمختاری کے تحفظ کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایرانی قوم نے اپنے اعلی اقدار کے دفاع کے لیے بہت قربانی دی ہے.

انہوں نے بتایا کہ تاریخی تحقیقات سمیت ایران کے خارجہ تعلقات کی تاریخ پر توجہ دینا، ملک کی سائنسی برادری اور خارجہ پالیسی کے عھدیداروں کے لیے ایک قومی ذمہ داری ہے.

انہوں نے ایران کی پرانی تہذیب اور تاریخ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایرانی عوام نے ابتدا ہی سے دوسرے ممالک کے ساتھ باہمی تعلقات بڑہانے اور باہمی گفتگو کرنے کی کوشش کی ہے اور یہ خصوصیت ایرانی قوم کی فطری خصلت ہے.

ایرانی وزیر نے کہا کہ ایرانی قوم نے تاریخ کے مختلف دوراں میں بہت زیادہ مصائب کا سامنا کرنا پڑا لیکن ایرانی عوام، اللہ کے فضل و کرم اور اپنی مزاحمت سے ان تمام مصائب و پریشانیوں پر قابو پا سکے.

انہوں نے کہا کہ ایران کی کئی ہزار سالہ تاریخ اور پرانی تہذیب کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران اپنی اہم جغرافیائی پوزیشن کی وجہ سے تاریخی اور تھذیبی کی تبدیلیوں میں سب سے اہم کردار ادا کر رہا ہے.

ظریف نے کہا کہ ایران نے شاہراہ ریشم کے ذریعے مغرب اور مشرق کے درمیان باہمی اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو فروغ دینے میں مدد کی ہے.

ایرانی وزیر خارجہ نے ایران کو خطی اور بین الاقوامی مسائل میں سب بڑے بااثر ملک قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور پڑوسی ممالک کے مشترکہ تاریخی تجربات سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ ایران نے گزشتہ صدیوں میں علاقائی اور عالمی تبدیلیوں میں سب سے بڑا کردار ادا کیا ہے.

9410*274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@