کسی پاگل کو جوہری معاہدہ توڑنے کی اجازت نہ دی جائے: سابق امریکی مشیر

نیو یارک، 16 دسمبر، ارنا - وائٹ ہاوس کے سابق قومی سلامتی امور کے مشیر نے کہا ہے کہ ایران ایٹمی سمجھوتہ تخفیف جوہری ھتھیار کے نفاذ کے لئے مثالی ہے لہذا کسی پاگل کو اس معاہدے کو توڑنے کی اجازت نہ دی جائے.

ان خیالات کا اظہار 'فرینک وون ہپل' نے ہفتہ کے روز ارنا کے نمائندے کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی جوہری معاہدے سے ممکنہ علیحدگی کے باوجود مجھے یقین ہے کہ دوسرے فریق بشمول ایران اس پر قائم رہیں گے.

فرینک وون ہپل جو امریکہ کی 'پرنسٹن' یونیورسٹی کے شعبہ جوہری طبیعیات کے پروفیسر بھی ہیں، نے مزید کہا کہ مجھے علم ہے کہ بعض عناصر ایران کی جوہری معاہدے سے علیحدگی چاہتے ہیں کیونکہ اس صورت میں ایرانیوں کو مفادات کے حصول مشکل ہوگی جبکہ ایران ایٹمی سمجھوتہ ایک تعمیری معاہدہ ہے جس سے دنیا میں تخفیف اسلحہ کے مقاصد کے نفاذ کے لئے مدد ملے گی.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہمیں ہوشیار رہنا ہوگا کہ کسی پاگل (ٹرمپ) کو اس معاہدے کو توڑنے کی اجازت نہ دی جائے.

سابق امریکی مشیر نے ایرانی کی مزائل قابلیت کے مخالف امریکہ کے حالیہ الزامات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مشرق وسطی میں ھتھیاروں کی بارش کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا کیونکہ اس کا نتیجہ آج ہم یمن میں دیکھ رہے ہیں.

274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@