سعودیہ پر میزائل حملے کو ایران سے ملانے کے امریکی الزام میں کوئی حقیقت نہیں: ایرانی سفیر

لندن، 16 دسمبر، ارنا - برطانیہ میں تعینات ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ یمن سے سعودی عرب پر میزائل حملے میں اسلامی جمہوریہ ایران کو ملوث کرنے کے امریکی الزام میں کوئی حقیقت نہیں اور نہ ہی وہ اسے ثابت کرسکتا ہے.

یہ بات 'حمید بعیدی‌نژاد' نے اپنے ٹیلی گرام پیج پر اقوام متحدہ میں تعینات خاتون امریکی مندوب ' نیکی ہیلی' کے حالیہ ایران مخالف بے بنیاد الزامات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ نیکی ہیلی صحافیوں کو یہ دکھانا چاہتا ہے کہ ایران نے یمن سے سعودی عرب کے حالیہ میزائل حملے میں اس ملک کے لیے ضروری میزائل فراہم کیا ہے.

ایرانی سفیر نے کہا کہ نیکی ہیلی نے ابھی بھی اپنے اس ایران مخالف بے بنیاد الزام کو ثابت کرنے کے لیے کو‏ئی ثبوت اور دستاویز فراہم نہیں کیا ہے.

بعیدی نژاد نے کہا کہ اس میزائل حملے کے دوران یمن کو سخت بین الاقوامی نگرانی اور سمندری، بحری، فضائی کے مکمل محاصرہ کا سامنا تھا تو ہیلی کو اس بات کا ثبوت کرناچاہیے کہ اس حساس حالات میں ایران نے کیسے یمن کے لیے میزائل فراہم کیا ہے؟

انہوں نے بتایا کہ جبکہ امریکہ بے گناہ اور نہتے یمنی عوام کے قتل عام کے لیے سعودی عرب کو ہتھیاڑوں فراہم کر رہا ہے کیسے اس مظلوم قوم کے حقوق کے دفاع کا دعوی کرتا ہے.

یاد رہے کہ نیکی ہیلی نے جمعرات کے روز امریکی وزارت دفاع میں سعودی عرب کے میزائل حملے میں انصار اللہ کی تحریک کے ہتھیاڑوں کی فراہمی کے لیے ایران پر الزام لگایا.

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب 'غلامعلی خوشرو' نے امریکی نمائندے کے اس من گھرٹ الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ دعوے امریکہ کے تباہ کن، اشتعال انگیز اور غیر ذمہ دارانہ کردار کی علامت ہے.

9410*274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@