ایران، چین کے نجی شعبوں میں سرمایہ کاری کے لئے پُرعزم

تہران، 13 دسمبر، ارنا – ایرانی وزیر تیل نے ایران اور چین کے در میان توانائی شعبے میں وسیع دو طرفہ تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم اپنے ملک میں چین کے نجی شعبے کی سرمایہ کاری کے خواہاں ہیں.

يہ بات "بيژن نامدار زنگنہ" نے گزشتہ روز چيني عالمي چيمبر آف کامرس کے چئيرمين "ونگ يانگ گئو" کے ساتھ ملاقات ميں گفتگو کرتے ہوئے کہي.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامي جمہوريہ ايران اور چيني کمپنيوں کے درميان کثيرالجہتي بالخصوص نجي شعبوں ميں گہرے تعلقات قائم ہے.

زنگنہ نے اس اميد کا اظہار کيا کہ دونوں ممالک کے درميان تجارتي تعلقات کو فروغ دينے کے علاوہ چيني کمپنياں ايران ميں نجي شعبوں ميں مزيد سرمايہ کاري کريں گي.

يانگ گئو نے چين ميں توانائي کي کمي کو اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اسلامي جمہوريہ ايران اپنے تيل اور گيس کے عظيم وسائل کے ذريعہ دو طرفہ تعلقات کي ترقي کي مدد کرسکتا ہے.

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک ايراني نجي شعبے ميں سرمايہ کاري، تيل اور پيٹروکيميکل کے شعبوں ميں باہمي تعاون کر سکتے ہيں.

تفصيلات کے مطابق، اسلامي جمہوريہ ايران اور چين کے در ميان تجارتي تعلقات ميں 31 فيصد کا اضافہ ديکھنے ميں آيا ہے اور دونوں صدور نے اس حجم کو 600 ارب ڈالر تک پہنچنے پر اتفاق کيا.

9393٭274٭٭

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@