ایران نے دنیا میں لوہے سے متعلق 'ڈی آئی آر' ٹیکنالوجی پر امریکی انحصار ختم کردیا

اہواز، 12 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے اسٹیل انڈسٹری میں ابتدائی کمی آئرن پاؤڈر جیسے (Direct Reduced Iron) کہا جاتا ہے، کی ٹیکنالوجی حاصل کرکے اس شعبے میں امریکی انحصار کو ختم کردیا ہے.

یہ بات سنیئر نائب ایرانی صدر 'اسحاق جہانگیری' نے پیر کے روز ایران کے جنوب مغربی صوبے خوزستان کے علاقے 'شادگان' میں اندرونی وسایل سے بننے والی ابتدائی کمی آئرن پاؤڈر فیکٹری کی افتتاحی تقریب کے موقع پر کہی.

شادگان اسٹیل کمپنی کی نگرانی میں پہلی بار ڈی آر آئی کی پیداوار کے لئے ایرانی ٹیکنالوجی 'پَرد' کا استعمال کیا جاتا ہے.

نائب ایرانی صدر نے اس موقع پر کہا کہ ڈی آر آئی ٹیکنالوجی پر بہت عرصے سے امریکی انحصار تھا مگر آج ایرانی ماہرین نے اس ٹیکنالوجی ڈیزائن اور پیداوار کو حاصل کیا اور اس شعبے میں تمام مصنوعات کو بنانے کی قابلیت حاصل کرلی ہے.

انہوں نے کہا کہ ایران نے اس ٹیکنالوجی کی صلاحیت کو پابندیوں کے دوران حاصل کر لی تھی اور یہ ہمارے لیے ایک عظیم اور قومی فخر ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا ملک اس حوالے سے اعلی صلاحیت کا حامل ہے اور اس ٹیکنالوجی کو فروغ دینے کے لیے بہت بڑے اقدامات شروع ہو چکے ہیں.

اس موقع میں نائب ایرانی وزیر صنعت و تجارت 'مہدی کرباسیان' نے کہا کہ ایران کے جنوبی صوبے خوزستان میں شادگان آئل فیلڈ کی براہ راست بحالی کے لئے مجموعی طور پر 116 ملین یورو اور 1919 ارب ریال سرمایہ کاری کی گئی ہے.

انہوں نے مزید بتایا کہ اس فیکٹری کے سپنج لوہے کے حصے میں 700 افراد کے لگھ بھگ سرگرم عمل ہیں.

انہوں نے موجودہ ایرانی کامیابیوں کی کامیاب پالیسیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے رواں سال میں یورپی اور ایشیائی ممالک کو 7 ملین ٹن سے زائد سٹیل کی برآمد کی ہے.

نائب ایرانی وزیر نے بتایا کہ ایران، 2012 اور 2013 کے سالوں میں صرف خام لوہا برآمد کر رہا تھا لیکن رواں سال کے گزشتہ سات مہینوں کے دوران ایران سے دوسرے ممالک کو 7 ملین ٹن سٹیل اور 5 لاکھ سے زائد سپنج لوہے کی برآمد کی گئی ہے.

9410*274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@