ایران کا دنیا کی سب سے زیادہ منشیات کو پکڑنے میں قابل قدر کردار

تہران، 11 دسمبر، ارنا - ایران کی انسداد منشیات پولیس کے سربراہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران دنیا کی سب سے زیادہ منشیات کی ضبطگی اور پکڑنے میں قابل قدر کردار ادا کررہا ہے.

ان خیالات کا اظہار بریگیڈیئر 'علی مویدی' نے پیر کے روز تہران میں منعقدہ سرحدی تعاون عمل کے ماہرین اجلاس کی افتتاحی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا.

اس نشست میں دنیا کے 30 ممالک، علاقائی اور بین الاقوامی اداروں کے نمائندے شریک تھے.

اس موقع پر بریگیڈیئر علی مویدی نے کہا کہ ایران دنیا میں سب سے زیادہ منشیات کو پکڑنے میں کردار ادا کررہا ہے جس میں 75 فیصد افیون، 61 فیصد مورفین اور 17 فیصد ہیروئن شامل ہیں.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے منشیات کے خام مال بھی دریافت کرنے میں پہلی پوزشین پر ہے.

بریگیڈیئر مویدی نے کہا کہ منعقدہ 'پیرس کے عہد' نامی نشست کا اصلی مقصد افغانستان میں منشیات کی اسمگلنگ کی روک تھام ہے مگر اس ملک میں منشیات کی کاشت اور پیداوار کو روکنے کے لئے کوئی روڈ میپ پیش نہیں ہوگیا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ منشیات کی کاشت، پیداوار اور اسمگلنگ کے خاتمے کا ایک طریقہ مطالبہ اور منافع بخش مارکیٹ کی کمی ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران میں اس لعنت کے خاتمے کے لئے اب تک 4000 افراد شہید اور 12 ہزار زخمی ہوگئے ہیں.

ایرانی انسداد منشیات کے ہیڈکوارٹر کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل نے کہا کہ بد قسمتی سے افغانستان میں منشیات کی کاشت اور پیداوار کا مسئلہ یورپی ممالک تک پہنچ گیا ہے اور یہ بہت پریشان کن بحران ہے.

تفصیلات کے مطابق، میثاق عمل کے تحت سرحدی تعاون کے ماہرین کی دو روزہ نشست کا ایرانی دارالحکومت تہران میں انعقاد ہو رہی ہے جس میں اقوام متحدہ کی منشیات اور جرم پر آفس کی سربراہ 'ماری ان' اور 30 ممالک کی عالمی اور علاقائی تنظیموں کے نمائندے شریک ہیں.

اس دو روزہ نشست میں منشیات کی اسمگلنگ، کاشت اور پیداوار اور ان کی دریافت کے طریقوں پر تبادلہ خیال ہوجائے گا.

9393*274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@