ایران اور برطانیہ کی باہمی مشاورت علاقائی استحکام کیلئے مددگار رہے گی: صدر روحانی

تہران، 10 دسمبر، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے برطانیہ کے ساتھ تعلقات کے فروغ بالخصوص بینکاری تعاون کی بحالی کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان باہمی مشاورت سے خطے میں قیام امن و استحکام کے لئے مدد ملے گی.

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر 'حسن روحانی' نے اتوار کے روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے برطانیہ کے وزیر خارجہ 'بورس جانسن' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ایران کو جوہری معاہدے کے ثمرات ملنے ہوں گے اور ہم سمجھتے ہیں نہ صرف ایران بلکہ تمام فریقین کو اس کے مثبت اثرات سے مستفید ہونا چاہئے.

انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے کے نفاذ ہمارے لئے اہم ہے اور اس کی بدولت ایران اور برطانیہ کے درمیان بینکاری شعبے میں بھی تعاون کو فروغ دینا ہوگا.

صدر روحانی نے کہا کہ باہمی مفادات کے حصول اور تحفظ کے لئے ایران اور برطانیہ کے درمیان دوستانہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کی ضرورت ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران خطے میں تشدد، جنگوں اور دہشتگردی کے بجائے امن و سلامتی اور استحکام کا خواہاں ہے اور اس مقصد کے لئے لندن کی تہران کے ساتھ باہمی مشاورت مددگار رہے گی.

ڈاکٹر روحانی نے کہا کہ دہشتگرد اور انتہاپسندوں کے خلاف جنگ میں ایران نے اہم کردار ادا کیا اور آج کوئی بھی ایران کی اس اہم حیثیت کو نظرانداز نہیں کرسکتا.

انہوں نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے امریکی سفارتخانے کو بیت المقدس منتقل کرنے کا فیصلہ غیرسنجیدہ ہے اور اس فیصلے سے خطے میں کشیدگی کی آگ میں مزید اضافہ ہوگا.

اس موقع پر برطانوی وزیر خارجہ نے ایران جوہری معاہدے کو باہمی تعلقات کی توسیع کے لئے اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک برطانوی کمپنیوں کی ایران میں سرمایہ کاری کا خواہاں ہے.

دہشتگردی کے خلاف اسلامی جمہوریہ ایران کے مثبت اقدامات کو سراہتے ہوئے بورس جانسن نے بتایا کہ برطانوی حکومت امریکی صدر کے حالیہ بیت المقدس کے حوالے سے فیصلے کو سنجیدہ اقدام نہیں سمجھتی.

خیال رہے کہ برطانوی خارجہ اس سے پہلے ایران کے نائب صدر اور جوہری ادارے کے سربراہ علی اکبر صالحی کے ساتھ بھی ملاقات کی جس میں فریقین نے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا.

بورس جانسن گزشتہ رات سرکاری دورے پر ایران پہنچ گئے اور وہ اپنے ایرانی ہم منصب محمد جواد ظریف، اعلی قومی سلامتی کونسل کے سیکریٹری ایڈمیرل علی شمخانی اور ایرانی اسپیکر علی لاریجانی کے ساتھ بھی ملاقاتیں کیں.

274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@