ایران اور ترکی کا سیکورٹی شعبے میں تعاون کو مزید بہتر بنانے پر اتفاق

تہران، 10 دسمبر، ارنا - ایرانی وزیر داخلہ نے ترکی کے ساتھ قریبی تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ سیکورٹی تعاون کو مزید بہتر بنانے کے لئے دونوں ممالک کے مشترکہ کمیشن کا جلد ترکی میں اجلاس منعقد ہوگا.

یہ بات 'عبدالرضا رحمانی فضلی' نے ایران کے دورے پر آئے ہوئے اپنے ترک ہم منصب 'سلیمان سوئیلو' کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان سیکورٹی پر دستخط ہونے والے معاہدے کے نفاذ کو اشارہ کرتے ہوئے دہشتگردوں، سرحدوں کے ذریعہ مصنوعات، منشیات اور انسان کی اسمگلنگ سے مقابلہ کرنے پر زور دیا.

رحمانی فضلی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور ترکی نے سیکورٹی کے حوالے سے اچھی کامیابیاں حاصل کر لی ہے اسی لئے ایک مناسب روڈ میپ تک رسائی کے لئے ترکی میں دونوں ممالک کے مشترکہ سلامتی کمیشن کا انعقاد ہوجائے گا.

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں ممالک اپنی مشترکہ سرحدوں کی سلامتی کے لئے اقتصادی، تجارتی اور سیکورٹی شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینے کے لئے پر عزم ہیں.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہم مطلوبہ نتائج پہنچنے کے لئے ایسے مشترکہ اجلاسوں کو جاری رہیں گے اور باہمی معاہدوں کے حوالے سے دونوں ممالک کے مستحکم عزم بہت ہی اہم ہے.

ایرانی وزیر داخلہ نے دشمنوں کی سازشوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ جیسا ہم نے اسلامی ممالک بالخصوص ترکی کے ساتھ عراق اور شام میں داعش دہشتگردوں کی شکست کے لئے بھرپور کوششیں کی تو دوسری سازشوں کے خاتمے کے لئے اس کو جاری رکھ سکتے ہیں.

ترک وزیر داخلہ نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور ترکی کے درمیان باہمی تعلقات خطے میں قیام امن اور سلامتی میں اہم کردار ادا کر رہا ہے.

سوئیلو نے کہا کہ ہم نے دہشتگردوں سے نمٹنا، منشیات، مصنوعات اور انسان کی اسمگلنگ، سرحدوں کی سلامتی اور غیر قانونی امیگریشن کا جائزہ لیا اور ایسے مضوعات کے حوالے سے مطلوبہ نتائج تک رسائی کے لئے سنجیدہ اقدامات کریں گے.

9393*274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@