القدس تمام الہامی ادیان کا مشترکہ دارالخلافہ ہے: ایران کے عیسائی رہنما

بیروت، 9 دسمبر، ارنا - ایران کی عیسائی برادری کے تین سنیئر رہنماؤں نے کہا ہے کہ عیسائی بھی مسلمانوں کی طرح بیت المقدس کے حوالے سے ٹرمپ کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہیں کیونکہ ہم القدس کو تمام الہامی ادیان کا مشترکہ دارالخلافہ سمجھتے ہیں.

ان خیالات کا اظہار ایران کے عیسائی رہنماؤں نے ہفتہ کے روز لبنان میں تعینات ایرانی سفیر 'محمد فتح علی' کے سایک ایک خصوصی ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا.

اس نشست میں ایرانی دارالحکومت تہران، تبریز اور اصفہان کے آرمینی پادری اور آرچ بشپ 'سیبوہ سارکیسیان'، 'کریکور چینچیان' اور 'سپیان کاشنچیان' موجود تھے.

ایران کے عیسائی پادریوں نے القدس کے حوالے سے ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے مزید کہا کہ مسجد الاقصی کا تعلق تمام الہامی ادیان سے ہے لہذا اس کے دفاع کے لئے عیسائی بھی مسلمانوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں.

بیت المقدس کے دفاع پر اسلامی جمہوریہ ایران کے کلیدی کردار کو سراہتے ہوئے آرچ بشپ سیبوہ سارکیسیان نے کہا کہ القدس کے خلاف اس سازش کو خطے میں ناکام بنانے کے لئے سب کو متحد ہونا پڑے گا.

اس نشست میں ایران کے سفیر نے ایرانی عیسائی رہنماوں کی آمد کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ ہم سب چاہئے ایران کے اندر ہو یا باہر، باہمی پُرامن بقا پر یقین رکھتے ہیں.

انہوں نے خطے اور دنیا میں فلسطینی عوام کی نئی بیداری کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہا کہ امریکہ اپنے حالیہ فیصلے میں ہرگز کامیاب نہیں ہوگا.

274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@