اسلامی مقدسات پر سامراج کی جارحیت کو ہرگز برداشت نہیں کریں گے: ایرانی صدر

تہران، 6 دسمبر، ارنا - ایران کے صدر نے علاقائی اقوام کے خلاف عالمی سامراج، امریکی اور صہیونی سازشوں اور مہم جوئی کا ذکر کرتے ہوئے اس بات پر انتباہ کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران، سامراجی قوتوں کی جانب سے اسلامی مقدسات پر جارحیت کو ہرگز برداشت نہیں کرے گا.

یہ بات ڈاکٹر 'حسن روحانی' نے بدھ کے روز تہران میں 31ویں بین الاقوامی وحدت امت اسلامی کانفرنس میں شریک معزز مہمانوں کی قائد اسلامی انقلاب آیت اللہ خامنہ ای کے ساتھ ملاقات کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ سامراجی قوتیں بشمول امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست مسلمانوں کو تقسیم کرنے اور خطے میں نئی مہم جوئی کی سازشوں میں مصروف ہیں.

انہوں نے اقوام عالم اور اسلامی ریاستوں پر زور دیا کہ دشمنوں کی شیطانی سازشوں خفیہ عزائم سے ہوشیار رہیں.

میلاد النبی (ص) اور چھٹے امام حضرت جعفر صادق علیہ السلام کے یوم ولادت پر پورے عالم اسلام کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے ایرانی صدر نے کہا کہ باہمی پُرامن بقا تمام الہامی ادیان بشمول اسلام کی مشترکہ خواہش ہے اور حضور پاک (ص) بھی تمام مذاہب کو پُرامن بقا کی دعوت دیتے تھے.

انہوں نے مزید کہا کہ آج خطی کی بہادرت اور غیرتمند اقوام دہشتگردوں اور تکفیری عناصر کا قلع قمع کرنے میں کامیاب ہوئیں تاہم اب بھی ہمیں خطے میں دشمنوں، عالمی صہیونی سامراج اور امریکہ کے عزائم سے ہوشیار رہنا ہوگا.

صدر روحانی نے کہا کہ آج دشمن مسلمانوں کے خلاف نئی سازش کا آغاز کررہا ہے اور وہ مسجدالاقصی کو نشانہ بنانا ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ القدس کا تعلق فلسطین اور دنیا کے تمام مسلمانوں سے ہے اور وہ کوئی ایسی جگہ نہیں جہاں عالمی سامراج مسلمانوں کے خیالات اور ان کے جذبات سے کھیلے.

ایرانی صدر نے عالم اسلام اور مسلمانوں پر زور دیا کہ وہ دشمنوں کی سازشوں کے خلاف یکصدا متحد ہوں اور ماضی کی طرح بہادری کے ساتھ میدان میں حاض رہیں.

274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@