ایران اور روس دہشتگردی کے خلاف فرنٹ لائن پر ہیں: لاریجانی

ماسکو، 5 دسمبر، ارنا - ایرانی اسپیکر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور روس دہشتگردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر ہیں اور اس حوالے سے دونوں ممالک کے درمیان قریبی تعاون موجود ہے.

یہ بات اسلامی مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) کے اسپیکر 'علی لاریجانی' نے گزشتہ روز روسی دارالحکومت ماسکو میں منعقدہ بین الاقوامی انسداد منشیات کانفرنس کے موقع پر روسی خبررساں ادارے ایتار تاس کیساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے انسداد دہشتگردی، منشیات کی روک تھام اور شام میں دہشتگردوں کے خلاف کاروائی کے حوالے سے ایران اور روس کے اہم کردار اور تعاون پر روشنی ڈالی.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران انسداد منشیات کی جنگ میں سنجیدہ ہے حالانکہ ایران میں سابق آمر حکومت کے دور میں ملک میں افیون کی پیداوار ہوتی تھی مگر اسلامی انقلاب کی فتح کے بعد اس کی پیدوار کو روک کردیا گیا جس کے بعد ایران منشیات کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر آگیا.

لاریجانی نے مزید کہا کہ ایران میں انسداد منشیات کے حوالے سے سخت قوانین موجود ہے اور اس مقصد کے لئے ادارہ انسداد منشیات کا قیام بھی عمل میں لایا گیا ہے جس کی صدارت ملک کے سربراہ مملکت کرتے ہیں.

انہوں نے انسداد منشیات کے خلاف بین الاقوامی تعاون کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ امریکہ اور نیٹو فورس نے افغانستان میں منشیات کی پیداوار اور اسمگلنگ کو روکنے کے لئے کچھ بھی نہیں کیا.

علی لاریجانی نے انسداد دہشتگردی اور منشیات کے حوالے سے ایران اور روس کے درمیان موجودہ تعاون پر اطمینان کا اظہار بھی کیا.

انہوں نے مزید کہا کہ بعض ممالک دہشتگردوں کے خلاف جنگ کرنے کا دعویٰ تو کرتے ہیں مگر حقیقت میں یہ ممالک صرف نام نہاد جنگ کرتے ہیں جبکہ ایران اور روس عملی اقدامات کے ذریعے دہشتگردوں کے خلاف جنگ کے میدان میں حاضر ہیں جسے سب دنیا دیکھ رہی ہے.

ایرانی اسپیکر نے ایران اور روس کے درمیان توانائی، پُرامن جوہری ٹیکنالوجی، تیل و گیس سمیت پیٹروکیمیل مصنوعات کے شعبوں میں باہمی تعاون کو مزید فروغ دینے پر زور دیا.

274**

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@