ایران اپنے دفاع کے لئے کسی سے اجازت نہیں لے گا: ولایتی

تہران ، 03 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے تشخیص مصلحت نظام کونسل کے اعلی رکن 'علی اکبر ولایتی ' نے کہا ہے کہ ایران اپنے دفاع کے لئے کسی سے اجازت نہیں لے گا.

تہران ميں طلوع حقيقت كے عنوان سے ايك تقريب ميں شركت كے بعد صحافيوں سے گفتگو كرتے ہوئے انہوں نے كہا كہ ايران اپنے دفاع كے لئے مغربي ممالك سے بات چيت نہيں كرے گا.


مغربي ممالك نے حال ہي ميں ايران كے دفاعي ميزائل پروگرام پر اپنے خدشات كا اظہار كرتے ہوئے كہا تھا كہ ايران كے ميزائل سيسٹم كے بارے ميں تھران كے ساتھ بات چيت كے لئے تيار ہيں.


مغربي ممالك كے بعض سربراہان كا اس حوالے سے بيانات كے رد عمل ميں علي اكبر ولايتي نے كہا كہ مغربي ممالك ايراني عوام كے بجائے فيصلہ نہيں كرسكتے كيوں كہ يہ ايران كے اندروني معاملہ ہے.
انہوں نے كہا كہ مغربي ممالك نے ہميشہ ايران كي دفاعي ترقي كو روكنے كے لئے مختلف ہتھكنڈے استعمال كئے ہيں جو ہميشہ ناكام رہا ہے.


بين الاقوامي اسلامي بيداري فورم كے سيكرٹري علي اكبر ولايتي نے مزيد كہا كہ ايران كے سپريم ليڈ ر آيت اللہ سيد علي خامنہ اي كے رہنماؤں سے فائدہ ليتے ہوئے استكباري دنيا كے جوانوں كے بيداري كے لئے اسلامي انقلاب ايران ہميشہ اپني كوشش جاري ركھے گي.


1*271**


ہميں اس ٹوئٹر لينك پر فالو كيجئے. IrnaUrdu@