خطے میں سیکورٹی کے قیام کا واحد راستہ باہمی اقتصادی، سائنسی اور ثقافتی تعلقات بڑھانا ہے: روحانی

زاہدان، 3 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے کہا ہے کہ خطے میں سیکورٹی کے قیام کا واحد راستہ باہمی اقتصادی، سائنسی اور ثقافتی تعلقات بڑھانا ہے.

يہ بات حسن روحاني نے اتوار کے روز چابہار' شہيد بہشتي' بندرگاہ کے فيز 1 کا افتتاح کي افتتاحي تقريب ميں خطاب کرتے ہوئے کہي.

انہوں نے کہا کہ شہيد بہشتي' بندرگاہ کے پہلے فيز کا افتتاح، اس صوبے کي ترقي کے ساتھ ساتھ خطي ممالک کے درميان باہمي تعلقات اور اتحاد کو مزيد فروغ دينے کے ليے بڑا تعميري اور موثر کردار ادا کرے گا.

انہوں نے امن بقائے باہمي کي مبني پر ايران کي پاليسي کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ خطي ممالک سڑکوں کے ذريعے ايک دوسرے کے ساتھ قريب لا سکتے ہيں.

ايراني صدر نے کہا کہ ايران، چابہار بندرگاہ کے ذريعے سياہ سمندر اور مشرقي يورپ سے منسلک ہو سکتا ہے.

روحاني نے ايران سميت خطے ميں مذہبي فرقوں کے درميان باہمي مستحکم اتحاد کا حوالہ ديتے ہوئے کہا کہ سب ممالک کو باہمي يکجھتي کو مزيد مضبوط بنانے کے ليے اعتدال پسندي کے راستے پر قدم اٹھانا چاہيے کيونکہ تشدد اور انتہا پسندي کا انجام تباہي اور نقصان ہے.

ايراني صدر نے کہا کہ پڑوسي اور خطي ممالک، قيام امن، سلامتي اور اعتدال کے ليے علاقائي سالميت کے احترام کرنے پر ناگزير ہيں.

صدر مملکت نے شہيد بہشتي بندرگاہ کے فيز 1 کے افتتاح پر خوشي کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس بندرگاہ کي صلاحيت 8 کرور ٹن تک پہنچ ہو سکتا ہے.

تفصيلات کے مطابق، ايراني صدر حسن روحاني گزشتہ روز اپنے اعلي سطحي وفد کے ساتھ ايراني صوبے سيستان و بلوچستان پہنچ گئے.

**9410

ہميں اس ٹوئٹر لينک پر فالو کيجئے. IrnaUrdu@