ایٹمی سمجھوتے کے بعد روس کو دوطرفہ تعاون کے معاہدوں میں ترجیح دی جائے گی: ایران

تہران - ارنا - سنیئر ایرانی جوہری مذاکرات کار نے کہا ہے کہ ہم پابندیوں کے دور میں ساتھ دینے والے دوستوں کو نہیں بھول سکتے اور ایٹمی سمجھوتے کے بعد دنیا کے ساتھ مختلف تعاون کے معاہدوں پر دستخط کرنے کے حوالے سے روس کو ترجیح دی جائے گی.

ان خیالات کا اظہار نائب ایرانی وزیر خارجہ اور جوہری معاہدے کی نگران ٹیم کے سربراہ 'سید عباس عراقچی' نے پیر کے روز ایران اور روس کے درمیان ریلوے اینجن کی مشترکی پیداوار کے حوالے سے معاہدے پر دستخط کرنے کے موقع پر کیا.

انہوں نے کہا کہ ایران پابندیوں کے دور میں اپنے دوستوں بالخصوص روس کو فراموش نہیں کرسکتا جبکہ ہم مستقبل میں ان ممالک کے ساتھ تعاون کے مختلف معاہدے کریں گے.

سنیئر ایرانی سفارتکار نے بتایا کہ پابندیوں کے دور میں ہمارا ساتھ دینے والے دوست ممالک کے ساتھ باہمی تعاون کو مزید فروغ دیا جائے گا.

انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے نفاذ کو 18 مہینے سے زیادہ گزرنے کے بعد یہ بات قابل مسرت ہے کہ عالمی کمپنیوں کے ساتھ ہونے والی متعدد مفاہمتوں کو اب باضابطہ طور پر معاہدے کی شکل مل رہی ہے.

٢٧٤**