پاکستانی سرحدی محافظ منشیات اور انسانی اسمگلنگ کی روک تھام کیلئے سرگرم عمل ہیں: نائب ایرانی وزیر داخلہ

تہران - ارنا - نائب ایرانی وزیر داخلہ برائے انتظامی اور سیکورٹی امور نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان معاہدے کے مطابق پاکستانی سرحدی محافظ منشیات، انسانی اسمگلنگ اور دہشتگرد گروہوں کی سازشوں کی روک تھام کے لئے اس ملک کی سرحدوں پر سرگرم عمل ہیں.

يہ بات 'حسين ذوالفقاري' نے آج بروز پير ايك سياسي اور سيكورٹي نشست كے بعد صحافيوں كے ساتھ گفتگو كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے كہا كہ عراق ميں داعش دہشتگرد ملك ميں بدامني قائم كرنے كے لئے متعدد كاروائياں كرتے ہيں اور گزشتہ تين سال سے اب تك 100 سے زائد دہشتگرد گروپوں كي ٹيميں تباہ ہوگئي ہيں.

ذوالفقاري نے كہا كہ ايراني دارالحكومت تہران ميں حاليہ دہشتگردي واقعات كے بعد سپاہ پاسداران اسلامي انقلاب، وزارت انٹيلي جنس اور مسلح افواج نے دہشتگردوں كي تباہي كے لئے سنجيدہ اقدامات كئے ہيں.

ايراني عہديدار نے ہمسايہ ممالك كے ساتھ دہشتگرد گروپوں سے نمٹنے كے لئے باہمي معاہدے كا حوالہ ديتے ہوئے كہا كہ ہم نے گزشتہ ہفتہ عراق اور تركي كے ساتھ اربعين حسيني كے زائرين كي سلامتي فراہم كرنے پر اتفاق كيا ہے.

نائب ايراني وزير داخلہ برائے انتظامي اور سيكورٹي امور نے غيرملكي شہريوں كي قانوني مہاجرت كے حوالے سے كہا كہ غير ملكي شہريوں كے غير قانوني داخلے كو روكنے كا ايك راستہ سرحدوں كو كنٹرول كرنا ہے جو سپاہ پاسداران اور مسلح افواج كے درميان باہمي تعاون كے ساتھ ملك كي مشرقي سرحدوں ميں سرحدي محافظوں كا قيام ہے.

انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ ہم غيرملكي شہريوں كے قانوںي داخلے كي سہولتوں سميت اخراجات كو كم كرنا فراہم كرتے ہيں.

9393*274**