عمار حکیم کی ایران سے دوری کا دعوی بے بنیاد ہے: عراقی رکن پارلیمنٹ

بغداد - ارنا - عراقی پارلیمنٹ کے ایک رکن نے کہا ہے کہ عراق کی اعلی مجلس کے سربراہ 'سید عمار حکیم' کی ایران سے دوری کا دعوی بے بنیاد اور بکواس ہے.

يہ بات 'حبيب الطرفي' نے ہفتہ كے روز لندن ميں شائع ہونے والے سعودي 'الشرق الاوسط' اخبار كي بے بنياد اور جھوٹي خبر پر اپنے رد عمل كا اظہار كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے سعودي 'الاشرق الاوسط' اخبار كي خبر كو جھوٹا اور بے بنياد قرار ديتے ہوئے كہا كہ ايسے بے بنياد دعووں كا مقصد اچھي پاليسي كي پوزيشن كي تباہي ہے.

انہوں نے اس خبر كو مسترد كرتے ہوئے كہا كہ ہم اسلامي جمہوريہ ايران كے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم كرتے ہيں كيونكہ عراق نے ہميشہ عراق كي حمايت كي ہے.

عراقي ركن پارليمنٹ نے كہا كہ عراق كي اعلي مجلس اور قومي حكمت كي تحريك نے تمام علاقائي اور عرب ممالك كے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم كئے ہيں اور ايك ممك كے لئے دوسرے ممالك كے ساتھ دوطرفہ تعلقات كو نظر انداز نہيں كريں گے.

تفصيلات كے مطابق، سعودي 'الاشرق الاوسط' اخبار نے ہفتہ كے روز دعوي كيا كہ سيد عمار حكيم قومي حكمت كي تحريك كي تشكيل كے ساتھ اسلامي جمہوريہ ايران اور دوسرے عرب ممالك سے دور ہو رہے ہيں.

ياد رہے كہ اس جھوٹي خبر كے برعكس عمار حكيم نے اس تحريك كي تشيكل كے موقع پر اپنے خطاب ميں اسلامي جمہوريہ ايران بالخصوص رہبر معظم كي حمايت كي تعريف كي.

9393*271**