امریکہ جوہری معاہدے کی تین شقوں کی خلاف ورزی کررہا ہے: ایرانی مذاکرات کار

تہران - ارنا - سنئیر ایرانی جوہری مذاکرات کار نے عالمی طاقتوں کے ساتھ طے پانے ایٹمی سمجھوتے کی تین شقوں پر امریکی خلاف ورزی کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ دفترخارجہ امریکہ مخالف ایرانی پارلیمنٹ کے بل کی بھرپور حمایت کرتا ہے.

یہ بات جوہری مذاکراتی ٹیم کے رکن اور نائب ایرانی وزیر خارجہ 'سید عباس عراقچی' نے ہفتہ کے روز پارلیمنٹ کی قومی سلامتی کمیٹی کے خصوصی اجلاس کے بعد صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ایرانی وزارت خارجہ نے امریکہ کے ایران مخالف اقدامات کے جوابی ردعمل میں پارلمینٹ کے منصوبہ کو منظور کیا ہے.

عراقچی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے مفادات کے لئے امریکہ کے ایسے اشتعال انگیز اقدامات اور جوہری معاہدے پر ان کی خلاف ورزی کے حوالے سے سنجیدہ ردعمل ناگزیر ہے اور خوش قسمتی سے پارلیمنٹ کی قومی سلامتی کمیٹی کے خصوصی اجلاس نے اس پر اتفاق کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران امریکہ کا منہ توڑ جواب دے گا.

نائب ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں جوہری معاہدے پر منعقدہ مشترکہ کمیشن کے اجلاس میں ایران نے امریکہ کی خلاف ورزی کے حوالے سے ایک رپورٹ پیش کیا اور اب تک ایرانی وزیر خارجہ 'محمد جواد ظریف' نے یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ 'فیڈریکا موگرینی' میں امریکی کے اس عالمی معاہدے پر قائم نہ رہنے پر متعدد خط لکھا ہے.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ جوہری معاہدے کے تمام فریقین نے امریکہ کی خلاف ورزی اور ایران کی دیانتداری پر اتفاق کیا اور ہمیں پوری دنیا میں اسلامی جمہوریہ ایران کی ناقابل شکست طاقت اور اقتدار کو دیکھانا چاہیئے.

9393*274**