ایران اور چین کے تجارتی تعاون میں 30 فیصد کا اضافہ

بیجنگ - ارنا - چین میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں بڑھتی ہوئے نمایاں تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایران اور چین کی مشترکہ تجارتی سرگرمیوں میں 30 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جو گزشتہ سال کے مقابلے میں زیادہ ہے.

یہ بات 'علی اصغر خاجی' نے گزشتہ روز چینی دارالحکومت بیجنگ میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور چین کے درمیان دوطرفہ سمیت اقتصادی تعلقات کو فروغ مل گیا ہے.

خاجی نے دونوں ممالک کے درمیان کثیرالجہتی بڑھتی ہوئی تعلقات کو اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ دوطرفہ، علاقائی اور بین الاقوامی مسائل پر مسلسل مذاکرات جاری ہے.

انہوں نے کہا کہ آئندہ ہفتے میں ایک اعلی سطح چینی وفد 5 اگست کو اسلامی جمہوریہ ایران کے 12ویں صدر ڈاکٹر 'حسن روحانی' کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے لئے تہران کا دورہ کریں گے.

ایرانی سفیر نے کہا کہ دونوں ممالک ثقافتی تعلقات کی مضبوطی کے لئے پر عزم ہیں اسی لئے چینی حکومت نے اس ملک میں منعقد ہونے والے کتاب میلے میں ایران کی دعوت اور ایک وسیع بوتھ ہمارے ملک میں دی جاتی ہے.

انہوں نے کہا کہ 50 ایرانی ماہر اور فن کار منعقد ہونے والے ثقافتی میلے میں شریک اور اپنے چینی ہم منصبون کے ساتھ باہمی تعاون کے راستے کا جائزہ لیں گے اور آئندہ مہینے میں چینی دارالحکومت بیجنگ کے فلم میوزیم میں ایرانی فلم کی نمائش منظر عام پر لائے گا.

انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعلقات کے حوالے سے کہا کہ جوہری معاہدے کے بعد چین اسلامی جمہوریہ ایران کے سب سے بڑا تجارتی اور غیرملکی سرمایہ کاری کا شراکت دار ہے.

علی اصغر خاجی نے کہا کہ چین ایرانی تیل اور غیرتیل مصنوعات کی خرید کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے اور 2017 کے چھ مہینے میں دونوں ممالک کے درمیان تجارتی تبادلات کے حجم کی شرح 18.7 ارب جو گزشتہ سال کے مقابلے میں 4 ارب ڈالر تک اضافہ دیکھنے میں آیا ہے.

ایرانی سفیر نے کہا کہ رواں سال کے پہلے چھ مہینے میں ہمارے ملک نے چین کو 4.1 کرور ٹن غیرتیل مصنوعات برآمد کیا ہے جو گزشتہ سال کے برابر میں 40.2 لاکہ ٹن قابل قدر اضافہ ہوگیا ہے.

انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران، فرانس اور چین کے درمیان جنوبی پارس میں گیس فیلڈ کے 11ویں فیز کی ترقی کے تین فریقی معاہدے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ چینی قومی تیل کمپنی نے اس معاہدے میں 3فیصد شراکت داری کیا ہے اور اس ملک نے جوہری معاہدے کے بعد تہران مشہد کے ریلوے کی فنانسنگ کے معاہدے پر دستخط کردیا.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایرانی اور چینی اعلی سفارتی حکام کے درمیان مسلسل مذاکرات کے ساتھ دوطرفہ بینکاری تعلقات کی ترقی اور موجودہ رکاوٹوں حل ہوسکیں گے.

9393*274**