ایران نے سائبر جرائم کی روک تھام کیلئے خصوصی ورکنگ گروپ تشکیل دے دیا

تہران - ارنا - اعلی ایرانی سفارتکار نے سائبر جرائم اور دہشتگردی کے خطرات سے نمٹنے کے لئے موثر سفارتکاری پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس مقصد کے لئے دفترخارجہ کے شعبہ بین الاقوامی قوانین میں خصوصی ورکنگ گروپ کا قیام عمل میں لایا گیا ہے.

ان خیالات کا اظہار نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے قانونی اور بین الاقوامی امور 'سید عباس عراقچی' نے بدھ کے روز تہران میں سائبر جرائم کی روک تھام کے حوالے سے منعقدہ کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کیا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ سائبر جرائم کو روکنے کے لئے کوئی بین الاقوامی دستاویز موجود نہیں جبکہ ایسے جرائم کی بندش کے لئے سائبر ٹیکنالوجی کے شعبے میں ہونے والی تبدیلیوں پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے.

عراقچی نے مزید کہا کہ بدقسمتی سے دنیا میں سائبر جرائم کا مقابلہ کرنے کے لئے موثر دستاویز نہیں اور اس حوالےسے یورپی کنونشن دوسرے ممالک کے خدشات کو دور نہیں کرسکتا.

انہوں نے کہا کہ سائبر شعبے سے متعلق مشکلات اور چینلجز سے نمٹنے کے لئے حکومتوں کے درمیان قریبی تعاون ناگزیر ہے جس کے ذریعے ہم آپس میں تجربات اور نقطہ نظر کا تبادلہ کرسکتے ہیں.

سید عباس عراقچی نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے سائبر جرائم کی روک تھام کے لئے موثر اقدامات اٹھائے جیسا کہ ملک میں سائبر جرایم کے خلاف سخت قوانین کی منظوری، ٹیکنالوجی اور سائبر شعبوں کو مسائل اور جرائم کو دیکھنے کے لئے خصوصی پولیس فورس کی تشکیل اور سائبر سپیس کے لئے قومی مرکز قائم کردیا گیا ہے.

٢٧٤**