علاقائی بحرانوں کے حل کے لئے ایران اور روس کے درمیان مشترکہ موقف پایا جاتا ہے: ایرانی سفارتکار

تہران - ارنا - ایرانی مجلس (پارلیمنٹ) کے اسپیکر کے معاون خصوصی برائے بین الاقوامی امور نے کہا ہے کہ روس اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ اپنے تعمیری مذاکرات کی وجہ سے علاقائی تبدیلیوں میں اہم کردار ادا کرے اور دونوں ممالک کا مشترکہ نقطہ نظر بہت سے بحرانوں کے حل کا موقع ہے.

يہ بات 'حسين امير عبداللہيان' نے پير كے روز ايران،روس پارليماني فرينڈ شپ گروپ كے چيئرمين 'گنادي اسكالر' كے ساتھ ايك ملاقات ميں گفتگو كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے دونوں ممالك كے درميان اچھي سطح پر ديرينہ تعلقات كہ حوالہ ديتے ہوئے كہا كہ ايران اور روس كے راہنماؤں كي سنجيدہ ہدايات پر دوطرفہ تعلقات كو فروغ ملا ہے.

انہوں نے كہا كہ موجودہ صورتحال ميں ايراني مجلس كا پارليماني فرينڈ شپ گروپ تمام شعبوں ميں دوطرفہ تعلقات كو وسعت دينے كے لئے تيار ہے.

ايراني سفارتكار نے شامي بحران كے حوالے سے دوطرفہ باہمي تعلقات كو اشارہ كرتے ہوئے كہا كہ شامي مسائل كے حل ميں اسلامي جمہوريہ ايران اور روس كے تعميري كردار سے مسائل كا حل يقيني ہو سكتا ہے.

اس موقع پر انہوں نے اپنے روسي ہم منصب كے ساتھ اچھے مذاكرات كے حوالے سے كہا كہ موجودہ صورتحال ميں روس كو علاقائي تبديليوں ميں اہم كردار ادا كرنا چاہيئے.

ايران،روس پارليماني فرينڈ شپ گروپ كے چيئرمين نے كہا كہ ہمارا ملك اسلامي جمہوريہ ايران كے ساتھ توانائي، قومي تعاون اور دوطرفہ اقتصادي تعلقات كي ترقي كے لئے تيار ہے.

9393*274**