ایران اور افغانستان کی سیکورٹی ایک دوسرے سے جڑی ہوئی ہے: ایڈمیرل شمخانی

تہران - ارنا - اعلی ایرانی قومی سلامتی کونسل کے سیکرٹری نے کابل میں ہونے والے دہشتگردی کے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور افغانستان کی سیکورٹی ایک دوسرے سے جڑی ہوئی ہے.

یہ بات ایڈمیرل 'علی شمخانی' نے گزشتہ روز ایرانی دارالحکومت تہران کے دورے پر آئے ہوئے افغان قومی سلامتی مشیر 'محمد حنیف اتمر' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ دہشت گردی اور تکفیری عناصر کے خاتمے کے لئے دونوں ممالک کے درمیان قریبی تعاون ناگزیر ہے.

ایڈمیرل شمخانی نے کابل میں گزشتہ روز ہونے والے دہشت گردی کے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس واقعے میں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین کے ساتھ اظہار بمدردی کیا.

انہوں نے افغانستان میں بڑھتی ہوئی پرتشدد کاروائیوں پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کاروائیوں کا مقصد افغانستان کی خوشحالی اور ترقی کو روکنا ہے.

انہوں نے ایران اور افغانستان کے درمیان مشترکات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک مشترکہ مفادات کے تحت ایک دوسرے سے مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانا چاہیئے.

انہوں نے ایک بار پھر افغان حکرمت کی دہشت گردوں کے خلاف اقدامات کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران افغانستان کو امن اور استحکام کی بازیابی کے حوالے سے مدد کرسکتا ہے.

اس موقع پر ایران اور افغانستان کی قومی سلامتی کے مشیروں نے مشترکہ سرحدی تعاون اور اسمگلنگ کی روک تھام سمیت دیگر سلامتی اور سیکورٹی کے امور کے بارے میں تبادلہ خیال کیا.

1*274**