سعودیہ جانے والے ایرانی سفارتکاروں کو ویزوں کے اجرا میں درپیش مسائل کا ازالہ کیا جارہا ہے

گرگان - ارنا - ایرانی سپریم لیڈر کے خصوصی نمائندہ برائے امور حج نے کہا ہے کہ سعودی وزیر حج کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کے تحت اس سال ایرانی زائرین کے مسائل کو دیکھنے کے مقصد سے 10 ایرانی سفارتکاروں کے سعودی عرب جانے کے حوالے سے ویزوں کے اجرا میں درپیش مسائل کو دور کیا جارہا ہے.

یہ بات علامہ 'سید علی قاضی عسکر' نے پیر کے روز ایران کے شمالی صوبے گلستان کے دارالحکومت 'گرگان' میں حج سمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ بعض عناصر اندرون اور بیرون ملک سے ایرانی دفترخارجہ کے قونصلر شعبے کے 10 اہلکاروں کو سعودی عرب کے ویزے جاری نہ ہونے کے حوالے سے غلط قیاس آرائیاں کررہے ہیں اور ان عناصر کا مقصد عوام کے جذبات سے کھیلنا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ پروپیگنڈوں کے باوجود اس سال حج کے لئے 86 ہزار 500 شہریوں نے اپنے ناموں کا اندراج کیا اور بڑی تعداد میں خواہشمند بھی انتظار کی فہرست میں ہیں.

علامہ سید علی قاضی عسکر نے کہا کہ ایرانی عازمین حج کا پہلا گروپ 31 جولائی کو سعودی عرب روانہ ہوگا.

یاد رہے کہ رواں سال ساڑھے 86 ہزار ایرانی شہریوں کو ملک کے مختلف شہروں میں واقع 20 ہوائی اڈوں کے ذریعے حج پر بھیجنے کے لئے تیاریاں مکمل کرلی گئیں ہیں.

ایرانی عازمین حج کو ملک کے مختلف ہوائی اڈوں کے ذریعے مدینہ منورہ اور مکہ مکرمہ بھیجا جائے گا جبکہ تہران کے امام خمینی (رح) بین الاقوامی ہوائی اڈے سے 25200 زائرین کو بھیج دیا جائے گا.

ایرانی زائرین کو سعودی عرب بھیجنے کا آپریشن 31 جولائی سے شروع ہو کر 25 اگست تک جاری رہے گا.

٢٧٤**