ايران نے شامي بحران كے حل كيلئے زيادہ كوششيں كي ہيں: چيني ايلچي

تہران - ارنا - چيني حكومت كے خصوصي نمائندے برائے شامي امور نے شامي بحران كے حل كے لئے اسلامي جمہوريہ ايران كے تعميري كردار كو سراہتے ہوئے كہا ہے كہ شام ميں كسي بھي كاروائي كو شامي عوام كے حق خود اراديت اور اس ملك كي سالميت كے تحفظ كي بنا پر ہونا چاہيئے.

يہ بات 'شيہ شيائويان' نے ہفتہ كے روز ايران ميں واقع چيني سفارتخانے ميں ايك پريس كانفرنس ميں خطاب كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے شامي بحران كے حل كے لئے اعلي ايراني حكام كے ساتھ اپني ملاقاتوں كا ذكر كرتے ہوئے كہا كہ اسلامي جمہوريہ ايران ايك علاقائي طاقتور ملك ہے جو شامي بحران كے حل ميں تعميري كردار ادا كررہا ہے.

شيائويان نے حاليہ سياسي صورتحال، جنگ بندي كے نفاذ اور اور بحرانوں كے حل ميں ايران كے كردار كي تعريف كرتے ہوئے كہا كہ ہم شامي بحران كے حوالے سے سياسي حل پر زور دے رہے ہيں اور ہمارے موقف نہيں بدلا ہے.

انہوں نے چين كي سالميت اور خودمختاري كا حوالہ ديتے ہوئے كہا كہ 2254 كي قرارداد كے مفادات كے تحت اقوام متحدہ كو شامي عوام اپنے ملك كے مستقبل كے فيصلہ كرنے كے حوالے سے اپنے ثالثي كردار ادا كرنا چاہيئے اور بيك وقت جنگ بندي كے نفاذ، سياسي مذاكرات اور انساني بنيادون پر امداد كے ساتھ ايك عملي حل پر قريب ہوسكتے ہيں.

انہوں نے مزيد كہا كہ اسلامي جمہوريہ ايران چين كا اسٹريٹجك بڑا شراكت دار ہے اور ہم اس ملك كے ساتھ دوطرفہ تعلقات كو فروغ دينے كے لئے تيار ہيں.

انہوں نے مشرق وسطي كے بحران كے حوالے سے كہا كہ شامي اور ہر بحران ميں چيني حكومت كا موقف مذاكرات اور سياسي حل ہے اور ہم آپريل سے اب تك كئي ممالك كے اعلي حكام كے ساتھ شامي بحران پر تبادلہ خيال كرتے ہيں.

انہوں نے امريكہ اور روس كے درميان شامي جنوبي علاقے كے معاہدے كے تحت ناجائز صہيوني رياست كے كردار كے بارے ميں كہا كہ شام ميں امن زون كے قيام كا منصوبہ ايك مثبت قدم ہے اور ہميں اميد ہے كہ ايسے اقدام بحرانوں كو حل كرسكے گا.

چيني عہديدار نے كہا كہ عراقي شہر موصل كي آزادي اور داعش دہشتگردوں كي تباہي كے ساتھ عالمي برادري باہمي تعاون كے ذريعہ تمام دہشتگردون كو ناكام كرسكيں گے.

چيني حكومت كے خصوصي نمائندہ برائے شامي امور نے كہا كہ اسلامي جمہوريہ ايران اور شام كا موقف ايك ہي ہے اور ہميں اميد ہے كہ سياسي حل كے ذريعہ جنگ بندي كا نفاذ، دہشتگردوں سے مقابلہ كرنا، شامي خود مختاري، آزادي اور علاقائي سالميت كا احترام كيا جائے.

انہوں نے شام كے ديرالزور علاقے ميں داعش دہشتگردوں پر ايران كے ميزائيل حملے كو اشارہ كرتے ہوئے كہا كہ دہشتگردي پوري دنيا كے عوام كے لئے ايك مشتركہ دشمن اور خطرہ ہے اور اقوام متحدہ كي سلامتي كونسل كي فہرست ميں تمام دہشتگردوں سے نمٹنا چاہيئے كيونكہ چين بھي دہشتگردوں كے خطرات كا شكار ہے.

انہوں نے اس بات پر زور ديا كہ ہم عالمي برادري كے ساتھ دہشتگردوں سے مقابلہ كرنے كے لئے پوري تيار ہيں.

9393*271**