ایرانی سفارتکاروں کی تعداد کم کرنے کا فیصلہ کویتی امیر کے تعمیری رویے کے برعکس ہے: ایرانی مشیر

تہران - ارنا - ایرانی اسپیکر کے مشیر برائے بین الاقوامی امور نے ایران پر بے بنیاد الزامات لگانے کے حوالے سے کویت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے اقدامات کویتی امیر کے حکیمانہ رویے کے برعکس ہے.

'حسین امیرعبداللہیان' نے گزشتہ روز اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ کویت حکومت جانب سے ایران پر الزامات اور ایرانی سفارتکاروں کی تعداد کو کرنے کا فیصلہ کویتی امیر کے تعمیری روئے کے بالکل برعکس ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور کویت کے درمیان دوستانہ اور برادرانہ تعلقات کا سلسلہ جاری رہے گا.

تفصیلات کے مطابق کویتی وزارت خارجہ نے اس ملک میں تعینات ایرانی سفیر 'علیرضا عنایتی' کے نام ایک خط میں کہا کہ آئندہ 45 روز کے دوران بعض ایرانی سفارتکاروں کو اس ملک چھوڑ دینا چاہیئے.

واضح رہے کہ کویتی حکومت نے ایرانی سفارتخانے کو ایک احتجاجی مراسلے بھیج دیا ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ایران اپنے ثقافتی قونصلٹ اور دفاعی امور کے دفاتر کو بند کرے.

اس واقعے کے خلاف اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے اعلی حکام کی جانب سے کویت کے ناظم الامور کو طلب کیا گیا جس میں ایران مخالف الزام پر شدید احتجاج کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ ایران کو بھی جوابی ردعمل میں سفارتکاروں کی تعداد کو کم کرنے کا حق حاصل ہے.

9393*274**