جوہری معاہدے کے نفاذ کیلئے ہماری عالمی پوزیشن مضبوط ہے: ایرانی مذاکرات کار

ویانا - ارنا - سنئیر ایرانی جوہری مذاکرات کار نے کہا ہے کہ امریکی خلاف ورزیوں کے باوجود اسلامی جمہوریہ ایران نے جوہری معاہدے کے نفاذ کے حوالے سے نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے جس سے بین الاقوامی سطح پر ہماری پوزیشن مضبوط ہوئی ہے.

یہ بات 'سید عباس عراقچی' نے گزشتہ روز ویانا میں بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی (IAEA) کے ڈائریکٹر جنرل 'یوکیا امانو' کے ساتھ ایک ملاقات کے بعد صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

یاد رہے کہ اعلی ایرانی مذاکرات کار جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے آٹھویں اجلاس میں شرکت کے لئے ویانا کے دورے پر ہیں اور یہ نشست آج بروز جمعہ منعقد ہوگی.

عباس عراقچی نے کہا کہ جوہری معاہدے کے نفاذ کے حوالے سے ایران اپنے وعدوں پو من و عن قائم ہے جس سے ایران اور عالمی جوہری ادارے کے درمیان قریبی تعاون کی علامت ہے.

انہوں نے کہا کہ ہم جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن میں امریکی خلاف ورزیوں کے حوالے سے اپنا احتجاج اور تحفظات پیش کریں گے.

عباس عراقچی نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے کے نفاذ کو 18 مہینے سے زائدہ گزرگئے اور اس دوران ایران اپنے وعدوں پر قائم رہا جس کی تصدیق عالمی جوہری ایجنسی نے بھی کی ہے جبکہ امریکہ کی جانب سے خلاف ورزی کا سلسلہ اب بھی جاری ہے.

انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے ذریعے امریکی خلاف ورزیوں کا مقابلہ کریں گے اور اگر ہمیں کوئی نتیجہ نہیں ملا تو ایران کو اس معاہدے سے ہٹ کر فیصلہ کرنے اور جوابی ردعمل دینے کا حق حاصل ہے.

٢٧٤**