کویتی ناظم الامور کی دفترخارجہ طلبی، ایران مخالف الزام پر شدید احتجاج

تہران - ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے اعلی حکام کی جانب سے کویت کے ناظم الامور کو طلب کیا گیا جس میں ایران مخالف الزام پر شدید احتجاج کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ ایران کو بھی جوابی ردعمل میں سفارتکاروں کی تعداد کو کم کرنے کا حق حاصل ہے.

ترجمان دفترخارجہ 'بہرام قاسمی' نے جمعرات کے روز اپنے ایک بیان میں کہا کہ ایران میں تعینات کویتی ناظم الامور 'فلاح الحجرف' کو آج دفترخارجہ کے اعلی حکام نے طلب کیا اور اس موقع پر العبدلی نامی کیس کے حوالے سے ایران پر لگائے جانے والے الزامات کو سختی سے مسترد کردیا گیا.

انہوں نے مزید کہا کہ دفترخارجہ کے حکام نے ایران کے خلاف کویتی حکام کے الزامات کو من گھڑت قرار دیتے ہوئے مزید کہا کہ بدقسمتی سے کویتی حکام خطے کی حساس صورتحال اور موجودہ کشیدگی کے خاتمے کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کے بجائے اسلامی جمہوریہ ایران پر بے بنیاد الزامات لگارہے ہیں.

قاسمی کے مطابق، کویتی ناظم الامور کو بتایا گیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کا العبدلی کیس سے کوئی تعلق نہیں اور اس کیس کے شروع سے ہی ایران نے کویتی حکام کو اپنے واضح مؤقف سے آگاہ کردیا تھا.

اس بیان میں مزید کہا گیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے ہمیشہ خطے کی حساس صورتحال کے تناظر میں علاقائی ممالک بشمول کویت کے حوالے سے ذمہ دارانہ رویہ اپنایا ہے تاہم سفارتکاروں کی تعداد کم کرنے کے لئے بھی ایران کو بھی جوابی ردعمل دینے کا حق حاصل ہے.

بہرام قاسمی نے بتایا کہ کویتی ناظم الامور نے حالیہ صورتحال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ جلد کویتی حکام کو اس معاملے سے آگاہ کریں گے.

واضح رہے کہ عکاظ اخبار نے آج صبح اپنی ایک رپورٹ میں دعوی کیا تھا کہ کویتی حکومت نے ایرانی سفارتخانے کو ایک احتجاجی مراسلے بھیج دیا ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ایران اپنے ثقافتی قونصلٹ اور دفاعی امور کے دفاتر کو بند کرے.

٢٧٤**