عراق اور شام ميں ايراني مشيروں كي موجودگي باہمي مفاہمت كے مطابق ہے: ايراني سفير

دمشق - ارنا - اردن ميں تعينات ايراني سفير نے كہا ہے كہ شام اور عراق ميں ايراني فوجي مشيروں كي موجودگي ان دونوں حكومتوں كي اجازت سے ممكن ہوئي ہے.

يہ بات فردوسي پور نے اردن ٹي وي چينل سے بات كرتے ہوئے كہي.

انہوں نے كہا كہ اسلامي جمہوريہ ايران، عراق اور شامي حكومتوں كے درميان مختلف سيكورٹي اور فوجي معاہدے موجود ہيں جس كے تحت ايران اپنے فوجي مشيروں كو شام اور عراق ميں دہشت گردي كے خلاف جنگ ميں استعمال كررہا ہے.

ايران كا عراق اور شام كے اندروني معاملات ميں مداخلت كے دعاوں كو مسترد كرتے ہوئے انہوں نے كہا كہ يہ دعوے جھوٹے ہيں كہ ايران نے اپنے فوجي مشيروں كو عراقي اور شامي حكومتوں كي اجازت كے بغير ان ممالك ميں بھيجا ہوا ہے.

انہوں نے كہا كہ اسلامي جمہوريہ ايران شام اور عراق ميں پايدار امن اور استحكام كے لئے كوشش كررہا ہے.

ايراني سفير نے مزيد كہا كہ ايران آستانہ اور جنيوا كے مذاكرات كے ذريعے شام ميں امن كي بحالي كے لئے اپنا اثرو رسوخ استعمال كررہا ہے.

انہوں نے علاقائي اور بين الاقوامي برادري سے كہا كہ وہ شام اور عراق ميں دہشت گردي كے خلاف جنگ ميں موثر كردار ادا كريں.

1*271**