دباؤ اور میزائل پروگرام پر پابندیوں کا مقصد ملک میں اسلامی نظام کو کمزور کرنا ہے: سنئیر ایرانی کمانڈر

تہران - ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی سپاہ پاسداران اسلامی انقلاب (IRGC) کی ایرواسپیس ڈویژن کے کمانڈر نے کہا ہے کہ دشمنوں کی جانب سے ایران پر دباؤ اور میزائل پروگرام کے خلاف پابندیوں کا مقصد ملک میں اسلامی نظام کو کمزور کرنا ہے.

يہ بات انہوں نے پارليمنٹ کے قومي سلامتي اور خارجہ پاليسي کميشن کے ارکان کے سپاہ پاسداران کے ايرواسپيس ڈويژن کے دورے کے دوران کہي.

انہوں نے دشمن کي ايران کے ميزائل دفاعي نظام پر موجود خدشات کا حوالہ ديتے ہوئے کہا ہے کہ امريکہ ہمارے دفاعي نظام سے خوفزدہ ہے اس لئے ہم پر مختلف الزامات لگا کر دباؤ کے ذريعے اس شعبے کي پيشرفت کو روکنا چاہتا ہے.

گزشتہ ماہ ميں شام کے ديرالزور علاقے ميں داعش کے ٹھکانوں پر ايراني ميزائل حملوں کے بارے ميں انہوں نے کہا کہ پہلے منصوبے کے تحت دہشت گردوں کے 60 ٹھکانوں کے خاتمے کے لئے حملوں کا منصوبہ بنايا گيا ليکن بعد ميں ايران کے سپريم ليڈر کے حکم کے مطابق اور عام شہريوں کي حفاقت کي خاطر صرف 3 اہم ٹھکانوں کو نشانہ بنايا گيا.

انہوں نے کہا کہ اللہ کي مدد سے تکفيري دہشت گردوں کے ٹھکانے ميزائلوں کي زد ميں آکر مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہيں.

ايراني جنرل نے کہا کہ ہمارے اطلاعات کے مطابق امريکہ اور ان کے حواري ايران کو اندر سے غير مستحکم کرنا چاہتے ہيں جس کي ہم کبھي اجازت نہيں ديں گے.

دفاعي اور فوجي سازو سامان کي تياري کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ اسلامي نظام اپنے ضروري دفاعي اسلحے سميت مختلف ميزائل اور ڈرون بنانے ميں خودکفيل ہوگيا ہے جس کے توسط سے ہم کسي بھي دشمن کے جارحانہ اقدامات کو خاک ميں ملاديں گے.

1*271**