آئندہ حکومت ملک میں پائیدار معیشت کے قیام کی خواہاں ہے: نائب ایرانی صدر

کیش - ارنا - سنئیر نائب ایرانی صدر نے کہا ہے کہ آئندہ حکومت ملک میں پائیدار معیشت کے قیام کی خواہاں ہے جس کا مقصد ذہانت اور مضبوط و طاقتور مینجمنٹ کے ساتھ چیلنجوں کا مقابلہ کرنا ہے.

ان خیالات کا اظہار 'اسحاق جہانگیری' گزشتہ روز ایران کے جنوبی ساحلی علاقے میں واقع جزیرہ کیش میں مختلف ترقیاتی، سیاحتی اور صنعتی منصوبوں کے کے موقع پر منصوبوں کے حکام اور سرمایہ کاروں کی موجودگی میں ایک خصوصی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا.

انہوں نے کہا کہ ملک کے شمال اور جنوب میں اچھے مواقع موجود ہیں اور ان علاقوں کی سہولیات کا استعمال کرنا ایران کی عظیم قوم کا حق ہے اور اس علاقوں کی توسیع کے لیے ان علاقوں پر اچھی سرمایہ کاری کرنا ناگزیر ہیں.

جہانگیری نے سرمایہ کاری میں پائیدار معیشت کی بڑی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران کی موجودہ حکومت نے 40 فیصد افراط زر پر قابو کر کے اور پائیدار معیشت کو قا‏ئم کیا.

نائب ایرانی صدر نے اس ملک کی معیشت میں امن و استحکام کے قیام کے لیے حکومت کی کوششوں کا بیان کرتے ہوئے کہا کہ مستحکم اقتصادی صورتحال، ایران میں تاجروں کے لیے بہت اہمیت کا حامل ہے اور بد امن اقتصادی صورتحال، سرمایہ کاری کی راہ میں ایک بڑی رکاوٹ ہے.

جہانگیری نے کہا کہ ملک کی معیشت صورتحال میں بہتری آئی ہے اور ایران کی بارہویں حکومت ایک نئی صورت حال کا سامنا اور آئندہ حکومت کے اہم درپیش چیلنج ملک کی معیشت اور منیجمنٹ ہے.

روزگار کے مواقع پیدا کرنا سرمایہ کاری اور پیداوار کے بغیر ممکن نہیں ہے اور اسی حوالے سے روزگار اور پیداوار میں اضافہ کرنے کے لیے سرمایہ کاری کی اچھی فضا کو قائم کرنا ناگزیر ہیں.

ماحولیاتی اورلوگوں کی ذریعہ معاش کے مسائل کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ ان مسائل کے خاتمے کے لیے حکومت سمیٹ حکومت کی تینوں شاخوں کے حکام اور مسلح افواج کو حکومت کی مدد کرنی چاہئے اور یہ ایک فرض اور ذمہ داری ہے.

انہوں نے مزاحمتی معیشت کی پالیسی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ملک کے درپیش چیلنجوں کے لیے یہ پالیسی ایک قابل عمل حل ہے.

انہوں نے غیر ملکی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ تیل، پیٹرو کیمیکل صنعت اور قدرتی وسائل کے شعبوں میں سرمایہ کاری کی جانی چاہیے.

نائب ایرانی صدر نے ایرانی جزائر کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران کے فری اقتصادی زونز کی توسیع ایران کی آئندہ حکومت کی اہم ترجیح ہے کیونکہ یہ علاقوں، ملک کی معیشت کے فروغ کے لیے بہت اہم کردار ادا کر رہے ہیں.

انہوں نے کہا کہ ملک میں 7 فری زونز کی موجودگی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ سات اور فری زونز کی تجویز پیش کی گئی ہے جو ایرانی مجلس کی منظوری کے ساتھ نفاذ کیا جائے گا.

انہوں نے کہا کہ ایرانی موجودہ حکومت میں فری زونز کے حوالے سے نمایان کامیابیان حاصل کرنے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ حکومت ان فری زونز کی توسیع کی حمایت کرے گی.

9410٭274٭٭