شام میں ایران کی موجودگی کسی دوسرے فریق سے اتفاق پر مشروط نہیں ہے: نائب ایرانی وزیر خارجہ

تہران - ارنا - نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے عرب اور افریقی امور نے کہا ہے کہ شام میں ایرانی عوام اور فوج کی موجودگی شامی حکومت کی درخواست اور دونوں ممالک کے درمیان معاہدے کے مطابق عمل میں لائي جارہی ہے جس کا کسی دوسرے علاقائی اور بین الاقوامی فریق سے اتفاق پر مشروط نہیں ہے.

يہ بات 'حسين جابري انصاري' نے ہفتہ كے روز تہران ميں روسي صدر كے نمائندہ خصوصي برائے شامي امور 'اليكزينڈر لاورنيوف' كے ساتھ ايك ملاقات ميں گفتگو كرتے ہوئے كہي.

اس موقع پر انہوں نے امريكہ اور روس كے درميان جنوب مغربي شام ميں جنگ بندي كے معاہدے كے حوالے سے كہا كہ ہم شامي حكومت كے ساتھ معاہدے كي بنا پر اس ملك كے بحران كے خاتمہ اور پائيدار سلامتي كي بحالي كے لئے تعاون كررہے ہيں.

نائب ايراني وزير خارجہ نے كہا كہ ہم شام كے اندروني امور ميں مداخلت نہيں چاہتے بلكہ اس ملك كے انساني اور سياسي بحران اور ملك كي تباہي كا خاتمہ ہمارا مقصد ہے.

انہوں نے آستانہ ميں منعقد ہونے والے شامي امن مذاكرات ميں فرانسيسي وفد كي موجودگي كے حوالے سے كہا كہ اس پانچويں اجلاس كے موقع پر ہم نے فرانسيسي وفد كے ساتھ ملاقات ميں شامي بحران كے سياسي حل پر تبادلہ خيال كيا.

انہوں نے مزيد كہا كہ قازقستان كے درالحكومت آستانہ ميں شامي امن مذاكرات ميں صرف ايران، روس، تركي، شامي حكومت اور باغيوں كے نمائندے شريك ہيں.

اعلي ايراني سفارتكار نے قابض صہيونيوں كي جانب سے فلسطيني نمازيوں پر پابندي كا حوالہ ديتے ہوئے كہا كہ گزشتہ دہائيوں سے اب تك ناجائز صہيوني رياست فلسطيني مظلوم عوام كے خلاف مسلسل سازشيں كررہي ہے جس سے يہ بات ثابت ہوئي ہے كہ فلسطينوں كي آزادي كا واحد راستہ مزاحمت كي حكمت عملي ہے.

انہوں نے علاقائي ممالك كے اندروني تنازعات كے خاتمہ پر زور ديتے ہوئے فلسطيني مظلوم عوام كي حمايت پر زور ديا.

انہوں نے اس اميد كا اظہار كيا كہ آستانہ ميں منعقد ہونے والے اجلاسوں اور دوسرے سياسي مذاكرات كے ذريعہ علاقائي تنازعات بالخصوص اسلامي دنيا كا اہم مسئلہ، فلسطين كا بحران حل كيا جا سكتا ہے.

انہوں نے كہا كہ ايران، روس اور دوسرے فريقوں كا مقصد شام ميں پائيدار سلامتي اور امن كو برقرار ركھنا اور دہشتگردوں سے مقابلہ كرنا ہے.

ايراني وفد كے اراكين نےدوسرے ممالك سے شام ميں تنازعات كے خاتمہ كے لئے كردار ادا كرنے پر زور ديا.

9393*271**