ایران،پاکستان آزادانہ تجارتی معاہدے کے حوالے سے اہم اقدامات اٹھانے کیلئے پُرعزم

اسلام آباد - ارنا - ایران کی ٹرڈ پروموشن اتھارٹی کے ایک سنئیر عہدیدار کا کہنا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان آزادانہ تجارتی معاہدے کو حتمی شکل دینے کے حوالے سے اہم اور سنجیدہ اقدامات اٹھانے کے لئے پُرعزم ہیں.

يہ بات ٹرڈ پروموشن اتھارٹي کے نائب سربراہ برائے امور برآمدي منڈي 'مير ہادي سيدي' نے ارنا کے نمائندے کے ساتھ خصوصي گفتگو کرتے ہوئے کہي جنہوں نے پاک،ايران تجارتي مذاکرات کے دوسرے دور ميں شرکت کے لئے اسلام آباد کا دورہ کيا تھا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامي جمہوريہ ايران اور پاکستان کے اعلي حکام تجارتي تبادلوں کو 5 ارب ڈالر تک پہنچانے اور تجارتي اور اقتصادي تعلقات بڑھانے کے لئے آزادانہ تجارتي معاہدے پر دستخط کريں گے.

مير ہادي سيدي نے گزشتہ ہفتے منگل اور بدھ کے روز پاکستاني دارالحکومت اسلام آباد ميں منعقدہ تجارتي کميشن کي دوسري نشست کا حوالہ ديتے ہوئے کہا کہ اس اجلاس ميں ہم بعض مسائل کو حل اور اہم اقدامات کا جائزہ ليا.

انہوں نے مزيد کہا کہ ايران اور پاکستان کے درميان اس اجلاس ميں فريقين نے تجارتي باہمي تعاون کے حوالے سے رکاوٹوں کو دور کرنے کے راستوں پر تبادلہ خيال کيا.

ايراني عہديدار نے کہا کہ دونوں ممالک کے درميان تجارتي تعلقات کو فروغ دينے کے لئے سٹينڈرڈ اور کسٹمز پردو ذيلي کميٹيوں کو تشکيل ديا جائے گا.

ٹريڈ پروموشن اتھارٹي کے نائب سربراہ برائے امور برآمدي منڈي نے کہا کہ برآمدات اور درآمدات ہونے والي مصنوعات کے حوالے سے ايک تجويز پيش کي گئي اور فريقين اس تجويز کا جائزہ لے رہے ہيں.

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے اعلي حکام اليکٹرانک طريقے سے کسٹمز کي معلومات کا تبادلہ چاہتے ہيں.

اس موقع پر انہوں نے اس بات پر زور ديا کہ دونوں ممالک کے درميان تجارتي باہمي تعاون کي ترقي کي صلاحيتوں کي بنا پر مستقبل ميں دوطرفہ تعلقات کو وسعت ملے گي.

اس اجلاس ميں کسٹمز کے مسائل، دونوں ممالک کے کسٹمز کي شماريات کے مسائل، ٹريفک اور ٹرکوں کي پيچيدگيوں اور اس سے متعلقہ دوسرے مسائل پر تبادلہ خيال کيا گيا.

ايراني عہديدار نے اس بات پر زور ديا کہ پاکستاني حکام اسلامي جمہوريہ ايران کے حکام کي طرح دوطرفہ تجارتي تعلقات کي توسيع اور آزادانہ معاہدے پر دستخط کرنے کے لئے پر عزم ہيں.

9393*274**