بیلجئیم کی ایران سے برآمدات میں 108 فیصد اضافہ

تہران - ارنا - بیلجئیم نے کہا ہے کہ اس کی ایران سے برآمدات کی سطح میں گزشتہ سال 108 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا اور وہ چاہتا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تجارتی اور اقتصادی تعاون کو مزید فروغ دے.

یہ بات بیلجئیم چیمبر آف کامرس کے سربراہ 'بیرنیندیز' نے ایران کے ایوان صنعت و تجارت کے 30 رکنی وفد کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور بیلجئیم ایک دوسرے کے قابل بھروسہ تجارتی شراکت دار بن سکتے ہیں اور اس مقصد کے لئے ہم ایران کے ساتھ تجارتی تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں.

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ صاف توانائی کی پیداوار، ای-کامرس، خلائی مصنوعات، آٹوموٹو اور زراعتی شعبوں میں دونوں ممالک کے درمیان اچھا تعاون کیا جاسکتا ہے.

بیجئیم چیمبر آف کامرس کے سربراہ نے مزید کہا کہ ان کا ملک ایران کے ساتھ ٹرانسپورٹیشن، صحت اور ادویات کے شعبوں میں دوطرفہ تعاون کا خواہاں ہے.

انہوں نے ٹیکنالوجی کے میدان میں ایران کی نمایاں ترقی کا ذکر کرتے ہوئے مزید بتایا کہ اس حوالے سے بھی دوطرفہ تعاون کو مزید فروغ دیا جاسکتا ہے.

اس ملاقات کے دوران ایرانی وفد کے سربراہ 'غلام حسین شافعی' نے کہا کہ وفد میں 30 ایرانی کمپنیوں کے نمائندے اور ایران کے ایوان صنعت کے دو سنئیر نائب صدور شامل ہیں اور اس دورے کا مقصد بیجلئیم کے ساتھ مشترکہ تعاون کو بڑھانے کے لئے اپنے عزم کا اعادہ کرنا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے کے بعد ایران کی اقتصادی صورتحال میں قابل قدر تبدیلیاں سامنے آئیں اور دنیا کے مختلف ممالک کے ساتھ اقتصادی تعاون بڑھانے کے لئے اچھی فضا قائم ہوگئی.

شافعی نے مزید کہا کہ گزشتہ دو سالوں میں ایران اور بیجلئیم کی تجارتی سرگرمیوں میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا اور مشترکہ کوششوں کے ذریعے اس کے حجم میں مزید اضافہ کیا جاسکتا ہے.

یاد رہے کہ اس وقت اسلامی جمہوریہ ایران اور بلجئیم کے درمیان تجارتی حجم 20 کروڑ ڈالر ہے.

٢٧٤**