ایران جوہری معاہدہ ایک عالمی دستاویز ہے، اس کے نفاذ کے ضامن ہیں: یورپی یونین

ویانا - ارنا - یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی خاتون سربراہ نے ایک بار پھر ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان طے پانے والے جوہری معاہدے کی حمایت کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ ایران جوہری معاہدہ ایک بین الاقوامی دستاویز ہے اور امریکہ سمیت تمام فریقین اس کے نفاذ کے ضامن ہیں.

یہ بات 'فیڈریکا مغرینی' نے گزشتہ روز بیلجیم کے دارالحکومت برسلز میں روسی وزیر خارجہ 'سرگئی لاوروف' کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ وہ تجارت اور سرمایہ کاری کے شعبوں کے حوالے سے اعداد و شمار پر مبنی رپورٹس پر بات کرتی ہیں اور جوہری معاہدے کے نفاذ کے بعد ایران اور یورپ کے تجارتی تعلقات میں اضافہ ہوا ہے اور یہ سلسلہ جاری رہے گا.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے یورپی یونین اپنے وعدوں پر قائم ہے کیونہ اس معاہدے کے نفاذ اور ایران کے ساتھ تعلقات میں ہمارے سیکورٹی اور اقتصادی مفادات ہیں.

فیڈریکا مغرینی نے بتایا کہ اس بات کی ضمانت دیتے ہیں کہ ایران کے ساتھ تعلقات کا سلسلہ جاری رہے گا اور جوہری معاہدے کے تمام نکات بالخصوص جوہری سرگرمیوں اور ایران مخالف پابندیوں کے خاتمے پر بھی من و عن عمل کیا جائے گا.

انہوں نے کہا کہ ہمیں علم ہے کہ امریکہ اپنی پالیسی کا از سرنو جائزہ لے رہا ہے اور ہم اس کا احترام کرتے ہیں مگر جوہری معاہدہ صرف ایک ملک تک محدود نہیں بلکہ اس کا تعلق پوری عالمی برادری سے ہے اور سلامتی کونسل نے بھی اس کی توثیق کردی تھی لہذا ہم اور تمام فریقین کی ذمہ داری ہے کہ جوہری معاہدے کے نفاذ کو یقنی بنائیں.

٢٧٤**