ایران نے فلسطین اور القدس کے حوالے سے نائجر قوم اور حکومت کے مؤقف کو سراہا

تہران - ارنا - ایرانی اسپیکر کے معاون خصوصی برائے بین الاقوامی امور نے کہا ہے کہ ہم مسئلہ فلسطین اور مسجدالاقصی کی آزادی کے حوالے سے تعمیری مؤقف اپنانے پر نائجر حکومت اور قوم کا شکریہ ادا کرتے ہیں.

یہ بات 'حسین امیر عبداللھیان' نے گزشتہ روز تہران کے دورے پر آئے ہوئے افریقی ملکی نائجر کے رکن پارلیمنٹ اور ایران،نائجر پارلیمانی فرینڈشپ گروپ کے سربراہ مسانی کورانی کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.

عبداللھیان نے نائیجر وفد کو ایران آمد پر خوش آمدید کہتے ہوئے نائیجر کے ساتھ باہمی تعلقات کی مزید توسیع کے لیے ایرانی مجلس کی دلچسبی اور مکمل آمادگی پر زور دیا.

اس موقع میں انہوں نے فلسطین اور قدس شریف کے معاملے پر نائیجر کے مواقف کو سراہا.

عبداللھیان نے ایرانی اسپیکر کی جانب سے ایران کے دورے کے لیے نائیجر کے اسپیکر کی سرکاری دعوت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے اور اس دورے کے لیے تہران کی مکمل آمادگی کا اظہار کیا.

نائیجر کے پارلیمانی دوستی گروپ کے سربراہ نے تہران کے دورے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ایرانی پارلیمنٹ کے تجربات کے استعمال اور دونوں ممالک کے تعلقات کی توسیع کے لیے ایرانی پارلیمنٹ کی حمایت کا مطالبہ کیا.

'ماسانی کورونی' نے نیامی میں اسلامی جمہوریہ ایران کی انسانی بنیاد پر امدادوں کا حوالہ دیتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان کثیر الجھتی تعلقات سمیت طبی اور سفارتی کے شعبوں میں باہمی تعاون کو مزید مضبوط کرنے پر زور دیا.

تفصیلات کے مطابق، نائیجر کے پارلیمانی دوستی گروپ کے سربراہ نے 10 جولائی کو اپنے ایرانی ہم منصب کی دعوت پر ایران کا دورہ کیا ہے.

ایران اور نائیجر کے درمیان اچھے اور قریبی تعلقات قائم ہے اور قریب مستقبل میں اس ملک کے سفارتخانہ، ایران کے دارالحکومت تہران میں افتتاح کیا جائے گا.

9410٭274٭٭