بھارتی کمپنیوں کا ایرانی بندرگاہ چابہار کو بھاری سامان کی فراہمی پر آمادگی کا اظہار

نئی دہلی - ارنا - بھارتی دو کمپنیوں نے ایرانی بندرگاہ چابہار کی بھاری سامان سمیت کرین کی فراہمی کے لئے اپنے آمادگی کا اظہار کیا جو بھارتی حکومت اس تجویز کا جائزہ لیتا ہے.

ايك بھارتي عہديدار نے كہا كہ جلد سے بھارتي كمپنيوں كي جانب سے ايراني بندرگاہ چابہار كے لئے كرين كي فراہمي كي تجويز كے حوالے سے بھارتي حكومت اپنے فيصلے كا اعلان كرے گي.

انہوں نے كہا كہ دستخط ہونے والے سہ فريقي معاہدے كے مطابق ايران كے خلاف پابنديوں كے باوجود بھارتي كمپنياں چابہار بندرگاہ كي ترقي كے لئے بھر پور كوششيں كر رہي ہيں.

اس سے پہلے بھارتي شپنگ، ہائي ويز اور نقل وحمل كے وزير 'نيتين گادكاري' نے كہا كہ بھارتي حكومت 2018 كے آخر تك چابہار بندرگاہ كي ترقي كا پہلا فيز مكمل كرنا چاہتا ہے.

تفصيلات كے مطابق، بھارت كي حكومت نے گزشتہ سال ايراني چابہار بندرگاہ كي ترقي كے لئے 8.5 كروڑ ڈالر كي فراہمي كي منظور كي ہے.

بھارتي حكومت شپنگ كي وزارت سے چابہار بندرگاہ كي ترقي كے منصوبوں كي سہولتيں فراہم كرنے كا مطالبہ كررہي ہے.

ياد رہے كہ گزشتہ سال كے دوران اسلامي جمہوريہ ايران، افغانستان اور بھارت نے چابہار بندرگاہ كي ترقي كے معاہدے پر دستخط كئے تھے.

يہ معاہدہ شمال اور جنوب كوريڈور كي توسيع اور علاقائي ممالك كے درميان تجارتي تعلقات كو فروغ دينے ميں اہم كردار ادا كررہا ہے.

9393*274**