دہشتگردوں کیخلاف دوسرے ممالک کے ساتھ تعاون کیلئے آمادہ ہیں: ایران

تہران - ارنا - ایران کے وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نہ تکفیری سوچ کو مانتا ہے اور نہ ہی دہشتگردی کو تسلیم کرتا ہے بلکہ انسداد دہشتگردی کے حوالے سے ہم دوسرے ممالک کے ساتھ تعاون کے لئے تیار ہیں.

ان خیالات کا اظہار 'عبدالرضا رحمانی فضلی' نے پیر کے روز تہران کے مقامی ہوٹل میں منعقدہ انسداد دہشتگردی کے حوالے سے 13ویں ورکنگ گروپ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ دہشتگردوں کی جانب سے آج جو عراق، شام، پاکستان، افغانستان، یمن اور نائیجیریا میں ہورہا ہے وہ الہامی ادیان یا کسی بھی مذہب کے لئے قابل قبول نہیں اور ایسی سفاکانہ کاروائیوں کی نفی کی جاتی ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران دوسرے ممالک میں دہشتگردوں کی کسی بھی کاروائی کی شدید مذمت کرتا ہے.

انہوں نے کہا کہ آج بین الاقوامی منظم جرائم انسانیت کے لئے خطرہ ہے لہذا ایسے خطرات سے نمٹنے کے لئے تمام ممالک اور متعلقہ اداروں کے درمیان باہمی تعاون اور اجتماعی مشاورت ناگزیر ہے.

ایرانی وزیر داخلہ نے بتایا کہ آج دہشتگردی عالمی امن و سلامتی کے لئے بڑاہ خطرہ ہے اور اس لعنت کے خاتمے کے لئے دنیا کے ممالک کو آپس میں تعاون کے لئے مجبور کردیا ہے.

٢٧٤**